اسٹاک مارکیٹ میں شدید مندی، ٹریڈنگ تیسری بار معطل

ہنڈریڈ انڈیکس 35 ہزار کی سطح سے نیچے آگیا
Mar 13, 2020
[caption id="attachment_1868852" align="alignnone" width="800"] فوٹو: اے ایف پی[/caption]

پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں کاروبار کے آغاز پر شدید مندی کے باعث ٹریڈنگ ہفتے میں تیسری مرتبہ کچھ دیر کےلیے پھر معطل کر دی گئی۔

جمعہ 13 مارچ کو اسٹاک مارکیٹ کا 100 انڈیکس 35 ہزار کی سطح سے نیچے آنے کے بعد 34 ہزار 273 کی سطح تک گرگیا جس کے باعث ٹریڈنگ 9 بج کر 25 منٹ پر روک دی گئی۔

کاروبار کے دوران 100 انڈیکس میں 4 فیصد سے زائد کی کمی ہوئی اور 1682 پوائنٹس گر گئے۔ کے ایس سی اپنی اس سال کی بلند ترین سطح سے 20 فیصد نیچے گر گئی۔

ٹریڈنگ دوبارہ بحال ہونے پر سرمایہ کار سرگرم نظر آئے جس کے بعد 100 انڈیکس تقریباً ہزار پوائنٹس اضافے کےساتھ 35 ہزار 546 کی سطح پر پہنچا۔

الفلاح جی ایچ پی اثاثہ انتظامیہ کی سی ای او ماہین رحمان کہتے ہیں کہ دنیا بھر کی طرح پاکستان کی اسٹاک مارکیٹ بھی گراوٹ کا شکار ہے۔

اسٹاک مارکیٹ کے اصول کے مطابق اگر مارکیٹ کاروبار کے دوران 4 فیصد سے اوپر یا نیچے چلی جائے تو ٹریڈنگ 45 منٹ کےلیے معطل کر دی جاتی ہے تاکہ سرمایہ کار نئے انداز میں کام شروع کریں۔

قومی ادارہ صحت کی جانب سے کرونا وائرس کو عالمی وبا قرار دیے جانے کے بعد سے دنیا بھر کی اسٹاک مارکیٹس متاثر ہوئی ہیں۔

بدھ 11 مارچ کو مارکیٹ میں مثبت رجحان دیکھا گیا تھا جس کے بعد مارکیٹ 37 ہزار 673 پوائنٹس پر بند ہوئی تھی۔ جمعرات 12 مارچ کو مارکیٹ 35 ہزار 956 کی سطح پر بند ہوئی۔

PSX

Tabool ads will show in this div