احمدعلی بٹ کی پوسٹ پرژالے سرحدی کی تنقید

احمد بٹ نے عورت مارچ کے متنازع نعرے کی مخالفت کی تھی
Mar 07, 2020

عورت مارچ کے حوالے سے سوشل میڈیا پر جاری بحث میں شوبز کی معروف شخصیات بھی اپنی رائے کااظہار کررہی ہیں، ایسے میں احمد علی بٹ کی پوسٹ پرژالے سرحدی نے شدید اختلاف رکھتے ہوئے شکریہ ادا کیا ہے۔

احمد علی بٹ نے اپنی پوسٹ میں لکھا تھا کہ منافقت کی یہ انتہا دیکھنا انتہائی پرمزاح ہے، خلیل الرحمان نے ٹی وی پر ماروی سرمد کے ساتھ بدسلوکی جبکہ وہ ٹوئٹرپر لوگوں کے ساتھ بدسلوکی کرتی ہیں، دونوں ہی غلط ہیں اور احترام کے قابل نہیں۔ میں دونوں میں سے کسی کیلئے ہمدردی نہیں رکھتا لیکن میں ان لوگوں کیلئے بھی ہمدردی نہیں رکھتا جو اس نام نہاد نعرے (میرا جسم میری مرضی ) کا استحصال کررہے ہیں۔ یہ ایک مغربی کمپین ہے جو اسقاط حمل کو جائز قراردیتی ہے، اعضاء کی فروخت پرپابندی، اور عصمت دری کی حمایت کرتی ہے، مزید بہت کچھ ہےجو اُپ گوگل کریں کیونکہ آپ کسی صورت میرا یقین نہیں کریں گے۔

احمد بٹ نے واضح کیا کہ جب خواتین کے حقوق کی بات کی جائے تو اسلام میں خواتین کو سب سے زیادہ حقوق اور عزت دی گئی ہے، افسوسناک ہے کہ یہ ہم یہ بات بھول کرغیرملکی فنڈڈمہم کی تقلید کرنے لگے۔

اس کے جواب میں ژالے نے انسٹا اسٹوریز میں جواب دیتے ہوئے لکھا " اپنے جسم پراپنا حق، آپ کتنے موٹے یا پتلے ہیں، پہننے کیلئے کیسا لباس منتخب کرتے ہیں اورآپ کی رنگت کیا ہے۔۔ اگر یہ حقوق رکھتے ہوئے آپ ایک خاتون ہیں تو آپ طوائف ہیں؟ ۔

ژالے نے اپنے تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے طنزیہ لکھا " ایسی مضحکہ خیز ذہنیت ظاہر کرنے کیلئے شکریہ احمد بٹ "۔

یاد رہے کہ دو روز قبل عورت مارچ کے حوالے سے نیو نیوز کے ٹی وی شو میں خلیل الرحمان نے اپنی بات کاٹے جانے پر یک دم برہم ہوکرماروی سرمد کیلئے غیراخلاقی زبان کا استعمال کیا تھا۔ دونوں کے درمیان خاصی گرما گرمی ہوئی، خلیل الرحمان کی جانب سے نامناسب الفاظ کے استعمال کے بعد سے سوشل میڈیا پر رائٹر پرشدید تنقید کرتے ہوئے معافی مانگنے کا مطالبہ کیاجارہا ہے، جبکہ ایک بڑ اطبقہ مصنف کی حمایت بھی کررہا ہے۔

AHMED ALI BUTT

ZHALAY SARHADI

Tabool ads will show in this div