فلم ’کاف کنگنا‘کی ناکامی کی وجوہات سامنے آگئیں

اداکارمحموداسلم نےفلم کا حصہ نہ ہونے کی وجہ بتادی

اداکار محمود اسلم نے فلم ’ کاف کنگنا‘ کی کاسٹ کا حصہ نہ ہونے کے حوالے سے اہم انکشاف کر دیا۔

اے آر وائی نیوز کے پروگرام ہر لمحہ پرجوش میں گفتگو کرتے ہوئے محمود اسلم کا کہنا تھا کہ خلیل الرحمان قمر نے انہیں فلم میں ان کے کردار بارے بتایااس کے بعد انہوں نے اور صباء حمید نے فلم کا 90 فیصد کام کروایا ۔ عکسبندی کے دورام خلیل الرحمان قمراور صباء حمید کی لڑائی ہوئی اور پھر کام رک گیا۔

انہوں نے بتایا کہ’پھر دوبارہ کام شروع کیا گیا تو خلیل الرحمان نے دوبارہ کام پر بلایا تواس وقت مجھے فلم’رانگ نمر ٹو‘کی عکس بندی کے لیے حیدر آباد جانا تھا کیونکہ فوراً کوئی بھی اداکار تاریخ نہیں دے سکتا کیونکہ ان کی کسی دوسرے کے ساتھ بھی کمٹمنٹس ہوتی ہیں‘۔

محمود اسلم نے کہا کہ’میں نے خلیل الرحمان قمر سے کہا کہ وہ واپس آکر ان کی بقیہ فلم کی عکس بندی کروا دیں گے جس پر خلیل صاحب نے کہا کہ صباء حمید کی جگہ کسی اور کو کاسٹ کیا جارہا ہے اور اگر آپ کہیں تو آپ کی جگہ بھی کسی اور اداکار کو کاسٹ کرلیا جائے‘۔

اس حوالے سے سماء ڈیجیٹل سے بات کرتے ہوئے رائٹر خلیل الرحمان قمر کا کہنا تھا کہ’محمود اسلم صحیح کہہ رہے ہیں لیکن ان کے کردار کی 80 فیصد شوٹنگ مکمل ہو گئی تھی ‘۔

خلیل الرحمان قمر کا کہنا تھا کہ ’فلم کے ناکامی کی وجہ مجھے معلوم ہے فلم کو باقاعدہ فلاپ کیا گیا تھا ‘ تاہم صباحمید کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ’ ہمارے معالات طے پاگئے ہیں اور صباء میرے آنے والے پروجیکٹ کا حصہ بھی ہیں‘۔

محمود اسلم نے اینکر وسیم بادامی سے گفتگو میں کہا تھا کہ’اداکار بادشاہ ہوتا ہے ایک بات بتادوں ایکٹر کا کوئی متبادل نہیں ہوتا ورنہ کا فلم کاف کنگنا ہٹ نہ ہوجاتی‘۔

اُن کا کہنا تھا کہ ’اداکار اسکرپٹ پر کام کر کے رائٹر کے مردہ الفاظ کو زندہ کرتا ہے، ہدایتکار ، اداکار اور رائٹر کا ایک ٹرائی اینگل ہے جس میں اداکار کی اہمیت سب سے زیادہ ہے‘۔

محمود اسلم کے اس بیان پر خلیل الرحمان قمر کا کہنا تھا کہ اداکار بادشاہ نہیں ہوتا ایسا بلکل بھی نہیں ہے، انہوں نے اپنے ہی ڈرامہ’لنڈا بازار‘ کی مثال دیتے ہوئے کہا کہ لنڈا بازار کے ساتویں قسط میں ہی میں نے محمود صاحب کو نکال دیا تھا ‘۔

mehmood aslam

KHALIL UR REHMAN QAMAR

Tabool ads will show in this div