سابق مصری صدر حسنی مبارک انتقال کرگئے

حسنی مبارک 2011 میں مستعفی ہوئے تھے
Feb 25, 2020
فوٹو: اے ایف پی
فوٹو: اے ایف پی
[caption id="attachment_1855567" align="alignnone" width="800"] فوٹو: اے ایف پی[/caption]

مصر پر تقریباً 30 سال حکومت کرنے والے سابق صدر حسنی مبارک 91ویں برس کی عمر میں انتقال کر گئے۔

غیر ملکی میڈیا الجزیرہ کے مطابق حسنی مبارک کے بہنوئی نے اے ایف پی کو بتایا کہ سرجری کے کچھ ہفتوں بعد حسنی مبارک منگل 25 فروری کو قاہرہ کے گالا فوجی اسپتال میں انتقال کرگئے۔

حسنی مبارک 2011 میں مستعفی ہوگئے تھے کیونکہ ان کی حکومت بدعنوانی، پولیس کی بربریت، سیاسی جبر اور معاشی مسائل سے دوچار ہوگئی تھی۔

سابق مصری صدر 1928 میں نیل ڈیلٹا کے ایک دیہی گاؤں میں پیدا ہوئے اور 1949 میں مصری ائرفورس میں شمولیت اختیار کی۔ پھر 1972 میں مصری ائرفورس کے چیف کمانڈر بن گئے۔

حسنی مبارک 1981 میں مصر کے چوتھے صدر بنے تھے۔ مشرق وسطیٰ میں آنے والے انقلاب ’’عرب بہار‘‘ کے نتیجے میں انہیں برطرف ہونا پڑا۔

انکے بعد 2012 میں مصر کے پانچویں صدر ڈاکٹر محمد مرسی بنے۔ 2013 جولائی میں فوج نے بغاوت کرتے ہوئے محمد مرسی کا تختہ الٹ دیا۔ سابق صدر کا انتقال 17 جون 2019 کو ہوا۔

اس وقت مصر کے موجودہ اور چھٹے صدر عبدالفتاح السیسی ہیں۔

Hosni Mubarak

Tabool ads will show in this div