کراچی:24 فیشن ڈیزائنرزایف بی آرکے ریڈارپر

ٹیکس چوری سے ملکی خزانے کو کروڑوں کانقصان
[caption id="attachment_1363637" align="alignnone" width="768"] تصویر: اے ایف پی[/caption]

ایف بی آر نے مہنگے ترین عروسی ملبوسات سمیت دیگرقیمتی ملبوسات تیار کرنےوالے کراچی کے 24 معروف فیشن ڈیزائنرزکو ںوٹسز جاری کردیے۔

ایف بی آر کے مطابق نئے ٹیکس پیئرز کے حوالے سے کی جانے والی تحقیقات کے دوران انکشاف ہوا کہ فیشن ڈیزائنرز لاکھوں روپے کے عروسی ملبوسات فروخت کرتے ہیں لیکن اس کے باوجود وہ ٹیکس نیٹ میں نہیں۔ اس ٹیکس چوری سے ملکی خزانے کو سالانہ کروڑوں کا نقصان پہنچ رہا ہے۔

نوٹس میں کہا گیا ہے کہ ان فیشن ڈیزائنرز کی آمدن ان کی جانب سے فراہم کردہ گوشواروں سے مطابقت نہیں رکھتی۔ ہرلباس پر لاکھوں روپے منافع کمانے کے باوجود متعدد ڈیزائنرز ٹیکس ادا نہیں کرتے اور اگر ادائیگی کرتے بھی ہیں تو وہ ان کی آمدن سے مطابقت نہیں رکھتی۔

ایف بی آر کی جانب سے جن ڈیزائنرز کو نوٹس بھیجے گئے ان میں ندا ازور، وردہ سلیم، عائشہ احمد ، ثانیہ مسکاتیہ، نتاشا کمال، ہاؤس آف فرح وایانی، شہرناز سمیت دیگر معروف لیلبز شامل ہیں۔

تمام ڈیزائنرز کو 24 فروری تک اِنکم ٹیکس ريٹرن اور فروخت کا ڈیٹا فراہم کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔

سماٗء ڈیجیٹل کی جانب سے کئی فیشن ڈیئزائنر سے ان کا موقف جاننے کیلئے رابطہ کیا گیا لیکن سبھی نے اس حوالے سے بات کرنے سے گریزکیا۔

Tabool ads will show in this div