پاکستان سےمضبوط برادرانہ تعلقات دنيا کيلئےقابلِ رشک ہيں،رجب طيب

پاکستان کو اجنبی ملک کی طرح محسوس نہيں کرتا
Feb 14, 2020

 

ترک صدر رجب طيب اردوان نے کہا ہےکہ مضبوط برادرانہ تعلقات دنيا کيلئے قابل رشک ہيں،ہماری مشترکہ تاريخ سنہری حروف سے بھری ہے۔ انھوں نے زور دے کر کہا کہ ہماری دوستی مفادات پر مبنی نہيں،اے اللہ! ہمارا يہ اشتراک قائم رکھنا، مستقبل ميں بھی پاکستان کا ساتھ دينے کا سلسلہ جاری رکھيں گے۔

جمعہ کو پارلیمنٹ کے مشترکہ سیشن سے ترک صدر رجب طیب اردوان نے اپنے خطاب میں کہا کہ ميں ايوان کو اور تمام بہن بھائيوں کو سلام پيش کرتا ہوں،آپ سے مخاطب ہونا ميرے ليے مسرت کا باعث ہے، اللہ کا شکر گزار ہوں، حمد و ثنا پيش کرتا ہوں۔

ترک صدر نے کہا کہ آپ سب کا بھی الگ الگ حيثيت سے شکر گزار ہوں،ترک عوام کی طرف سے بھی آپ کوسلام پيش کرنا چاہتا ہوں، پاکستان نے گرمجوشی سے ميرا استقبال کيا، مہمان نوازی پر مشکور ہوں، پاکستان کواجنبی ملک کی طرح محسوس نہيں کرتا ہوں۔

رجب طيب نے کہا کہ مضبوط برادرانہ تعلقات دنيا کيلئے قابل رشک ہيں، ہماری مشترکہ تاريخ سنہرے حروف سے بھری ہے،پاکستان ميرے ليے دوسرے گھر کا درجہ رکھتا ہے۔

ترک صدر نے تسلیم کیا کہ جب ترکی زندگی اور موت کی کشمکش ميں مبتلا تھا تو ترک تحريک آزادی ميں پاکستانی خواتين نے کنگن ديے،پاکستانی بہن بھائيوں سے محبت نہيں کريں گے تو کس سے کريں گے، سڑکوں پر گڑ گڑا کردعائيں کرنے والوں کو ہم کيسے بھول سکتے ہيں؟ دھمکيوں کے باوجود ہميں نہ چھوڑنے والوں کو ہم کيسے بھول جائيں ؟

مسئلہ کشمیر سے متعلق انھوں نے کہا کہ کشمير ہمارے ليے ويسا ہی ہے جيسا آپ کيلئے ہے،پاکستان کا دکھ درد ہمارا دکھ درد ہے،اس کی کاميابی ہماری کاميابی ہے،کشمير کی حيثيت ہمارے ليے وہی ہے جو ترک قوم کيلئے چنا قلعے کی تھی۔ انھوں نے مزید کہا کہ کشميری بھائی سالہا سال سے مشکلات کا شکار ہيں، فلسطين،قبرص اور کشمير کے بھائيوں کيلئے دعاگو ہيں۔

ترک صدر نے مزید کہا کہ ايف اے ٹی ايف پر پاکستان کو بھرپور حمايت کا يقين دلاتے ہيں، اقتصادی ترقی کا عمل ايک دو دن ميں مکمل نہيں ہوتا، پاکستان کی دہشتگردی کيخلاف جدوجہد کو خراج تحسين پيش کرتے ہيں، انسدادِ دہشتگردی ميں پاکستان کے ساتھ تعاون جاری رکھيں گے۔

رجب طيب اردوان کا بطور سربراہ مملکت پاکستان کا يہ 11واں دورہ ہے۔ترک صدر نے پارليمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے چوتھی بار خطاب کيا۔

پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں چیئرمین جوائنٹ چیفس آف اسٹاف کمیٹی جنرل ندیم رضا ، ائیر چیف مارشل مجاہد انور خان، نیول چیف ظفر محمود عباسی بھی پارلیمنٹ میں موجود تھے۔ گورنر سندھ عمران اسماعیل،وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ، گورنر اور وزیراعلی خیبرپختونخوا بھی پارلیمنٹ میں موجود تھے۔

Joint session

Tabool ads will show in this div