حکومت اپنی آئینی ذمہ داری پوری نہیں کررہی،خورشیدشاہ

ایک ملک میں 2 الگ قانون خطر ناک بات ہے
Feb 03, 2020
[video width="640" height="352" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2018/02/WhatsApp-Video-2020-02-03-at-10.34.12-AM.mp4"][/video]

خورشید شاہ نے کہا ہے کہ اللہ سے امید ہے کہ میرے ساتھ انصاف ہوگا، موجودہ حکومت کے باعث مہنگائی کی سونامی آئی ہے، سندھ میں آئی جی تبدیل نہ ہونا، پنجاب اور خیبرپختون خوا میں چار چار آئی جی تبدیل ہونا انتہائی خطرناک بات ہے،حکومت اپنی آئینی ذمہ داری پوری نہیں کررہی۔

پیر کو سکھرمیں پیپلزپارٹی کے رہنما خورشید شاہ کے خلاف آمدن سےزائد اثاثہ جات کیس کی سماعت احتساب عدالت میں ہوئی۔ خورشید شاہ کو این آئی سی وی ڈی اسپتال سے ایمبولینس کے ذریعے عدالت لایا گیا، خورشید شاہ، صوبائی وزیر اویس شاہ و دیگر عدالت میں پیش ہوئے۔

نیب کی جانب سے 1 ارب 24 کروڑ روپے کی کرپشن کے دائر ریفرنس کا کیس احتساب عدالت میں موجود ہے۔ خورشید شاہ سمیت 18 افراد کے نام بھی ریفرنس میں شامل ہیں،نیب راولپنڈی کی جانب سے بھی تفتیش جاری ہے،چیئرمین نیب کی جانب سے بنائی گئی جے آئی ٹی کی بھی تفتیش جاری ہے۔

احتساب عدالت کے جج امیرمہیسر نے سماعت 15 روز کےلیےملتوی کردی اور خورشید شاہ کو دوبارہ 18 فروری کو پیش کرنے کا حکم دیا۔

خورشید شاہ نے احتساب عدالت کے باہر میڈیا سے غیر رسمی گفتگو میں بتایا کہ  موجودہ حکومت کے باعث مہنگائی کی سونامی آئی ہے ، سونامی تباہی کا نام ہوتا ہےاور یہ تباہی موجودہ حکمران لائے ہیں۔  انھوں نے سوال اٹھایا کہ عمران خان کہتے تھے کہ روزانہ 12 ارب روپے کی کرپشن ہو رہی ہے تو اب یہ 12 ارب روپے بچ رہے ہیں، وہ کہاں جا رہے ہیں؟

خورشید شاہ کا کہنا تھاکہ چینی، آٹا  یا اور کوئی چیز ان کے دام اچانک بڑھ جاتے ہیں،چیزوں کے دام بڑھانے والا کون ہے، حکمران بتائیں،ڈالرکا بڑھنا اور روپے  کی قدر گرنے کا ذمہ دار کون ہے ؟

خورشید شاہ نے مزید کہا کہ سندھ میں آئی جی تبدیل نہ ہونا، پنجاب اور خیبرپختون خوا میں چار چار آئی جی تبدیل ہونا انتہائی خطرناک بات ہے،ایک ملک میں دو الگ قانون ملک اور حکمرانوں کے لئے خطر ناک بات ہے۔ پیپلزپارٹی کے رہنما کا کہنا تھا کہ حکومت اپنی آئینی ذمہ داری پوری نہیں کررہی۔

KHURSHEED SHAH

Tabool ads will show in this div