یوحناآباد میں 2 افراد کو زندہ جلانے کے کیس کافیصلہ

عدالت نے 40 ملزمان کو بری کردیا
Jan 29, 2020
فوٹو: اے ایف پی
فوٹو: اے ایف پی
[caption id="attachment_1830167" align="alignnone" width="800"] فوٹو: اے ایف پی[/caption]

انسداد دہشت گردی عدالت نے 2 افراد کو زندہ جلانے کے الزام میں گرفتار 40 افراد کو بری کردیا۔ واقعہ لاہور کے علاقے یوحنا آباد میں 2015ء میں خودکش حملوں کے بعد پیش آیا تھا۔

انسداد دہشت گردی عدالت نے لاہور کے علاقے یوحنا آباد میں 2015ء میں دو چرچوں پر خودکش حملوں کے بعد مشتعل افراد کے ہاتھوں 2 افراد کو زندہ جلانے کے کیس کا فیصلہ سنادیا۔

یہ بھی پڑھیں : لاہور، یوحنا آباد میں چرچ کے باہر دھماکے، 15 افراد جاں بحق، 78 زخمی

اے ٹی سی نے نعمان اور بابر کے لواحقین کے ملزمان کے ساتھ تصفیے کے بعد سی سی پی کی دفعہ 345 کے تحت 40 افراد کو مقدمے سے بری کرنے کا حکم دیا۔

لاہور کے علاقے یوحنا آباد میں 15 مارچ 2015ء کو مشتعل مظاہرین کے ایک ہجوم نے 2 نوجوانوں کو زندہ جلادیا تھا جس کے الزام میں 42 افراد کو گرفتار کیا گیا تھا تاہم دو ملزمان جیل میں انتقال کر گئے تھے۔

مزید جانیے : سانحہ یوحنا آباد لاہور میں ملوث 5 دہشت گرد گرفتار

یوحنا آباد کے دو چرچوں میں خودکش حملوں میں ایک درجن سے زائد افراد ہلاک اور 70 سے زائد زخمی ہوگئے تھے۔

Tabool ads will show in this div