نوشہرہ میں بچوں کے تحفظ کیلئے گرینڈ جرگہ

ملزمان کو سرعام پھانسی کا مطالبہ

خیبر پختونخوا کے ضلع نوشہرہ میں سالہ بچی کے ساتھ زیادتی اور قتل کے بعد علاقہ مکینوں نے بچوں کا تحفظ یقینی بنانے کیلئے غور و فکر شروع کردیا ہے۔ اس سلسلے میں زیارت کاکا صاحب میں گرینڈ عوامی جرگہ منعقد ہوا جس میں علاقہ عمائدین نے بچوں کے ساتھ بدسلوکی کے واقعات پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے حکومت پر قانون سازی کیلئے زور دیا ہے۔

گزشتہ ہفتے نوشہرہ کے علاقہ زیارت کاکا صاحب میں سات سال کی بچی عوض نور کو زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد گلادباکر قتل کیا گیا تھا۔ اس وقت بھی علاقہ مکینوں نے اپنی مدد آپ کے تحت ملزمان کو پکڑ کر پولیس کے حوالے کیا تھا۔

اتوار کو کاکا خیل قوم کا گرینڈ جرگہ منعقد ہوا جس میں عمائدین نے عوض نور کے ملزمان کو کیفر کردار تک پہنچانے کے لئے ہر حد تک جانے کا اعلان کیا۔

عمائدین نے جرگہ کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آج ہماری بیٹیوں کی عزتیں محفوظ نہیں۔ عوض نور کے قاتلوں جیسے درندے گلی گلی گھوم رہے ہیں لیکن حکومت ایسے جرائم کی بیخ کنی کے لئے کوئی قانون سازی نہیں کر رہی۔

انہوں نے کہا کہ نوشہرہ میں ایک سال پہلے صوبائی وزیر اطلاعات شوکت یوسفزئی نے 9 سالہ مناہل کیس میں قانون سازی کا اعلان کیا تھا لیکن اس پر عمل درآمد نہیں ہوا۔ آج حکمران دوبارہ ایسی قانون سازی کے دعوے کرتے ہیں لیکن عملی طور پر کچھ بھی نظر نہیں آتا۔

یہ بھی پڑھیں: ننھی عوض نور کے قاتل پولیس نہیں عوام نے پکڑے

علاقہ مشران نے کہا کہ عوض نور کے بعد ضلع نوشہرہ میں بچوں سے زیادتی کے مزید تین کیسز سامنے آچکے ہیں جس کے باعث عوام اپنے بچوں کو سکول بھیجنے سے بھی گھبرانے لگیں ہیں۔

گرینڈ جرگہ نے مطالبہ کیا کہ ایسے کیسوں کیلئے خصوصی عدالتیں قائم کی جانی چاہئیں جو جلد از جلد فیصلہ کرسکیں جبکہ عوض نور کے قاتلوں سمیت بچوں سے زیادتی کرنے والے تمام مجرمان کو سربازار پھانسی دی جائے۔

جرگہ کے بعد میڈیا سے گفتگو کے دوراب عوض نور کیس کی پیروی کرنے والے وکیل عزیزالدین نے سرعام سزا کے مطالبے کی تاویل پیش کرتے ہوئے کہا کہ جنرل ضیاء الحق کے دور حکومت میں ایک مجرم کو مینار پاکستان کے سامنے عوامی مجمعے کے درمیان پھانسی دی گئی تھی جبکہ جنرل پرویز مشرف کیس میں بھی مجرم کو ڈی چوک پر پھانسی دینے کا حکم دیا گیا ہے۔

عزیز الرحمان نے کہا کہ اگر کوئی جج ایسا فیصلہ کرسکتا ہے تو اس کا مطلب ہے کہ قانون میں اس کی گنجائش موجود ہے۔

Tabool ads will show in this div