پاکستان میں کرپشن بڑھ گئی، ٹرانسپیرنسی انٹرنیشنل

دس سال میں پہلی مرتبہ بدتری

کرپشن اور بدعنوانی پر نظر رکھنے والے عالمی ادارہ ٹرانسپیرنسی انٹرنیشنل کے مطابق پاکستان میں 2018 کے مقابلے میں 2019 میں زیادہ کرپشن ہوئی ہے۔

ٹرانسپیرنسی انٹرنیشنل نےدنیا کے 180 ممالک میں کرپشن سے متعلق سال 2019 کی رپورٹ جاری کردی ہے۔ اس رپورٹ کے مطابق 2018 کی ’کرپشن پرسپشن انڈیکس‘ میں پاکستان کا اسکور 33 تھا جو 2019 میں خراب ہوکر 32 پر آگیا۔

رپورٹ میں سب سے زیادہ پریشان کن بات یہ ہے کہ پاکستان گزشتہ 10 برس میں مسلسل بہتری کی جانب گامزن تھا مگر 2019 میں واپس پیچھے چلا گیا ہے۔ کرپٹ ممالک کی فہرست میں پاکستان 117 سے بڑھ کر 120 پر چلا گیا ہے۔

ٹرانسپیرنسی نے اپنی رپورٹ میں 180 ممالک کا احاطہ کیا ہے اور 180 ممالک میں پاکستان 120 ویں نمبر پر ہے۔ یعنی پاکستان نے کرپشن میں 119 ممالک کو پیچھے چھوڑ دیا ہے جبکہ 60 ممالک پاکستان سے بھی زیادہ کرپٹ ہیں۔

رپورٹ میں اس بات کی بھی نشاندہی کی گئی ہے کہ جنوبی ایشیا کے ممالک میں کرپشن کی روک تھام کیلئے اقدامات کمزور پڑ گئے ہیں۔

ٹرنسپرینسی انٹرنیشنل نے کرپشن کا راستہ روکنے کیلئے تجاویز بھی دی ہیں اور ان تجاویز کو پڑھ کر اندازہ لگانا مشکل نہیں کہ پاکستان میں کرپشن میں اضافہ کیوں ہوا ہے۔

ان تجاویز کے مطابق بجٹ اور عوامی سہولیات ذاتی مقاصد اور مفاد رکھنے والوں کے ہاتھوں میں نہ دی جائیں جبکہ حکومتی اہلکاروں کی بھرتی کے وقت ان کے مفادات دیکھے جائیں تاکہ وہ اقتدار میں آکر حکومتی اختیارات ذاتی مفادات اور مقاصد کیلئے استعمال نہ کرسکیں۔

اس کے ساتھ ہی شہریوں کو با اختیار بنایا جائے جبکہ سماجی کارکنان، کرپشن کی نشاندہی کرنے لوگوں اور صحافیوں کو تحفظ فراہم کیا جائے۔

Curroption

Tabool ads will show in this div