مسئلہ کشمیرپرعالمی برادری سنجیدہ کردارادانہیں کررہی،شاہ محمود

وزیرخارجہ کی نیویارک میں پریس بریفنگ
Jan 16, 2020
[caption id="attachment_1816047" align="alignnone" width="850"] تصویر: ریڈیوپاکستان[/caption]

وزير خارجہ شاہ محمود قريشی کا کہنا ہے کہ مسئلہ کشمير کے حل کے ليے عالمی برادری سنجيدگی سے اپنا کردار ادا نہيں کررہی ، کئی ممالک کوکشميرکی صورتحال پرتشويش ہے ۔

نيويارک ميں پريس بريفنگ کے دوران وزيرخارجہ کا کہنا تھا کہ پاکستان بات چيت پرتيارہےليکن بھارت راضي نہيں ہورہا جبکہ کئي ممالک دو طرفہ بات چيت پرزوردے رہے ہيں ۔ پانچ ماہ ميں دوسری بارسلامتی کونسل ميں کشميرکےمعاملےپربات ہوئی۔ پاکستان بات چيت پرتيارہےليکن بھارت نہيں۔

وزیرخارجہ شاہ محمودقریشی نے عالمی برادری پرزوردیاہے کہ وہ مقبوضہ کشمیرکے عوام کو بھارت کی غلامی اورمظالم سے نجات دلانے میں اپناموثرکرداراداکرے۔

اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیوگوتریزسے ملاقات کے بعدنیویارک میں نیوز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے شاہ محمود کا کہنا تھا کہ کشمیر کاتصفیہ طلب معاملہ اقوام متحدہ کے ایجنڈے پر بدستور موجود ہے جو بھارت کے اس موقف کی نفی کرتاہے کہ یہ دوطرفہ معاملہ ہے۔

وزیرخارجہ نے مقبوضہ کشمیرکی موجودہ صورتحال پراقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کااجلاس طلب کرنے کے بارے میں چین کی حمایت کاشکریہ ادا کیا۔ انہوں نے کہاکہ متعددملکوں نے پاکستان اوربھارت کے درمیان حالیہ کشیدگی پرگہری تشویش ظاہر کی ہے۔

مشرق وسطیٰ میں امریکہ اورایران کے درمیان بڑھتی ہوئی کشیدگی کے حوالے سے شاہ محمودقریشی کا کہنا تھا کہ پاکستان کسی تنازع کا حصہ نہیں بلکہ خطے میں قیام امن کی کوششوں میں معاون کا کرداراداکرے گا۔

وزیر خارجہ نے مشرق وسطیٰ میں کشیدگی کے خاتمے کی ضرورت پرزوردیتے ہوئے کہاکہ سفارتکاری کے ذریعے اس مسئلے کے موثرحل کاموقع فراہم کیاجاناچاہیے۔ ہم مشرق وسطيٰ ميں امن کيلئے کردار ادا کر رہے ہیں۔ خطہ ايک اور کشيدگی کا متحمل نہيں ہوسکتا۔

Tabool ads will show in this div