سندھ بلدیاتی انتخابات،آرڈیننس میں تیسری تبدیلی،متحدہ برہم

اسٹاف رپورٹ
کراچی : ترميم پے ترميم، پھر ترميم پے ترميم مگر پھر بھی سکوں نہ مل سکا، سندھ حکومت نے بلدياتی انتخابات ميں تیسری بار ترمیم کردی، جس کے بعد سندھ حکومت کی جانب سے تيسرا ترميمی بلدياتی آڈيننس جاری کرديا گیا۔ تیسری بار ترمیم پر ايم کيو ايم بھڑک اٹھی اور تراميم کو متحدہ کا ووٹ بينک توڑنے کی سازش قرار دے ديا۔

رابطہ کميٹی کے مطابق آرڈیننس بدنيتی پر مبنی ہے جس نے بلدیاتی انتخابات کی شفافیت پر سوالیہ نشان کھڑے کر دیئے ہيں، اس سے قبل قائم مقام گورنر سندھ آغا سراج درانی نے تيسرا ترميمی آرڈيننس جاری کيا جس کے تحت ديہی يونين کونسل کو يونين کميٹی کا درجہ مل گيا۔ اس کے علاوہ کسی اميدوار کے فوت ہونے کی صورت ميں ضمنی انتخابات تين ماہ بعد ہوں گے۔

سیاسی جماعتیں ايک سے زائد مخصوص نشستوں پر امیدواران کی فہرست جمع کرائیں گی اورغلط کوائف دینے والے امیدوارں کو چار سال تک نااہل قرار دیا جاسکے گا۔ سماء

میں

سندھ

lost

spies

stokes

Tabool ads will show in this div