ننکانہ واقعہ کے ملزمان کے خلاف سخت کارروائی کا فیصلہ

وزیر داخلہ ننکانہ پہنچ گئے

وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ بھارت میں اقلیتوں کے ساتھ سلوک اور ننکانہ صاحب واقعے میں فرق ہے۔ پاکستان میں ننکانہ صاحب جیسے واقعات اور سوچ کی کوئی جگہ نہیں جبکہ وزیرداخلہ اعجاز شاہ نے کہا ہے کہ ننکانہ صاحب واقعہ کے ذمہ داران کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔

وزیراعظم عمران خان نے ٹوئٹ کرتے ہوئے کہا ہے بھارت میں اقلیتوں کے ساتھ سلوک اور ننکانہ صاحب واقعے میں فرق ہے۔ ایسے واقعات پاکستان کے ویژن کے خلاف اور ناقابل برداشت ہیں۔

وزیراعظم نے کہا کہ مودی آر ایس ایس نظریے کے تحت اقلیتوں پر ظلم کی حمایت کرتا ہے اور مسلمانوں کو ہدف بناکر حملے کرنا آر ایس ایس کے ایجنڈے کا حصہ ہے۔

دوسری جانب وفاقی وزیر داخلہ اعجاز شاہ نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان میں اقلیتیں محفوظ ہیں۔ وطن کی حفاظت کے لیے ہم سب ایک ہیں۔۔

وزیرداخلہ نے کہا کہ انسانیت کیلئے ہم سارے اکٹھے ہیں۔ اگر معاشرہ زندہ ہو تو کوئی برائی نہیں پنپتی۔ ہم اپنےگھر کی حفاظت نہیں کریں گے تو کوئی لاہور سے آکرنہیں کرے گا۔

اعجاز شاہ نے کہا کہ ننکانہ صاحب واقعے کا نوٹس لیا ہے۔ حکومت اقلیتوں کے بھرپور تحفظ کے تمام تر اقدامات اٹھائے گی۔

MINORITIES

Tabool ads will show in this div