امریکہ میں اڑن طشتری دیکھے جانے کا دعویٰ

لاس ویگاس میں اڑتی نامعلوم شئے کی ویڈیو بھی بنائی گئی

آپ نے یو ایف او یعنی اڑن طشتری کے بارے میں تو سنا ہی ہوگا جس کے بارے میں قیاس آرائیاں ہیں کہ یہ اکثر کسی 'دوسری دنیا' سے زمین پر اترتی ہے اور اس میں موجود خلائی مخلوق یا ان کے نصب کردہ آلات ہماری دنیا کے بارے میں جاننے کی کوشش کرتے ہیں۔ اس حوالے سے اکثر یہ دعویٰ بھی سننے میں آتا ہے کہ فلاں ملک کے فلاں حصے میں خلائی مخلوق کی یہ سواری دیکھی گئی ہے۔ اسی طرح کا ایک واقعہ حال ہی میں امریکہ میں مشہور ہوا ہے جس کے مطابق نہ صرف ایک شخص نے اڑن طشتری دیکھی بلکہ اس کی ویڈیو بھی بنالی جو خوب وائرل بھی ہوئی۔

ایک برطانوی نیوز ویب سائٹ کے مطابق امریکہ کی ریاست نیواڈا کے شہر لاس ویگاس میں 19 دسمبر 2019 کو رات کے وقت نظر آنے والی ایک نامعلوم روشن چیز نے لوگوں کو حیران کردیا۔ ایک شخص نے اس منظر کی ویڈیو بھی بنالی جس میں وہ شئے برق رفتاری سے پہاڑی سلسلے کی طرف حرکت کر رہی تھی اور اس دوران اس سے خاصی تیز سفید اور نیلے رنگ کی روشنیاں بھی خارج ہو رہی تھیں۔

جس شخص نے ویڈیو ریکارڈ کی اس کا دعوی تھا کہ اڑن طشتری نے اوپر اڑتے ہوئے صرف3 منٹ میں 50 میل کا فاصلہ طے کر لیا۔ اگر اس شخص کی اس رفتار والی بات پر یقین کیا جائے تو اس کا مطلب یہ ہوا کہ وہ اڑنے والی شئے یا اڑن طشتری ایک ہزار میل فی گھنٹہ کی رفتار سے حرکت کر رہی تھی۔

اس شخص نے وہ ویڈیو یو ٹیوب پر اپنے چینل پر پوسٹ کی ہے اور یہ دعوی بھی کیا ہے کہ اڑنے والی اس چیز کے بہت نزدیک تھا اور اس سے کسی قسم کی کوئی آواز نہیں آ رہی تھی۔ اس نے اس بات کی بھی نشاندہی کی کہ اگر وہ کوئی ہوائی جہاز ہوتا تو اسے ویڈیو بناتے ہوئے کوئی آواز ضرور آتی۔

اس شخص نے یہ بھی دعویٰ کیا کہ اس اڑن طشتری کے گرد کچھ چھوٹی چیزیں بھی نظر آئیں جو شہر کے اوپر آسمان پر فلیش کرتی دکھائی دے رہی تھیں۔

نیواڈا میں رات کے وقت آسمان پر اس قسم کی غیر معمولی سرگرمیاں کئی مرتبہ سننے میں آئی ہیں اور گزشتہ چند برسوں کے دوران اس قسم کے واقعات میں اضافہ ہوا ہے۔

کچھ افراد کا یہ خیال ہے کہ نیواڈا میں اڑن طشتریوں کے یہ قصے امریکی فوجی طیاروں کی بھی کارستانی ہو سکتی ہے تاہم اس حوالے سے بھی یقین سے کچھ نہیں کہا جاسکتا۔

UFO

Tabool ads will show in this div