شہریت سے متعلق متنازعہ بھارتی بل: جامعہ ملیہ کےطلباء گرفتار

بھارت میں شہریت سے متعلق متنازعہ بل کےخلاف مظاہرہ

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2018/12/MM-Jamia-Milia-Protest-Pkg-16-12.mp4"][/video]

بھارتی شہر نئی دہلی میں شہریت سے متعلق متنازعہ بل کےخلاف مظاہرہ کرنے والے جامعہ مليہ اسلامیہ  کے طلبہ اور طالبات کو نشانہ بنایا جبکہ کئی نوجوانوں کو گرفتار کرلیا۔

بھارت بھر ميں صرف غير مسلموں کو شہريت دينے کے قانون کےخلاف احتجاجی مظاہرے جاری ہیں۔

حکومتی منصوبے کےخلاف طلبہ نے احتجاج کا اعلان کيا تو بھارتی پوليس جامعہ مليہ يونيورسٹی پر کارروائی کرتے لائبريری اور کلاسز ميں گھسی اور نوجوانوں پر اندھا دھند ڈنڈے برسائے جبکہ امام مسجد کو بھی نہيں چھوڑا۔

يونيورسٹی انتظاميہ کے مطابق پوليس بغير اجازت يونيورسٹی ميں داخل ہوئی۔

بھارتی پوليس کی کارروائی کےخلاف رات بھر طلبہ سڑکوں پر رہے اور بڑی ريلی نکالی گئی۔ دہلی پوليس ہيڈ کوارٹرز کے باہر احتجاج بھی کيا اور ساتھيوں کی رہائی کا مطالبہ بھی کیا۔

علی گڑھ مسلم يونيورسٹی اور لکھنو ميں دارالعلوم کے طلبہ نے بھی خلاف احتجاج کيا۔ جامعہ مليہ کے طلبہ نے مسلمانوں کو بھارتی شہريت نہ دينے کے ايکٹ کے خلاف احتجاج کا اعلان کر رکھا تھا۔

Jamia Millia Islamia

Tabool ads will show in this div