امریکا،ننھےمسلمان ذہن طلبہ سےتعصبانہ برتاؤ،اوبامانےمدعوکرلیا

2window ٹیکساس : امريکا کی رياست ٹيکساس ميں چودہ سالہ احمد محمد نے گھريلو گھڑی بنائی اور اسکول لا کر دکھائی توسب سمجھے کہ يہ بم ہے، جس پر طالب علم کو گرفتار کر ليا گيا۔ واقعہ میڈیا میں آنے پر امریکی صدر نے بچے کو گھڑی کے ہمراہ بطور مہمان وائٹ ہاؤس مدعو کرلیا چودہ سالہ طالب علم احمد محمد نے ميڈيا کو بتايا کہ اُس نے گھرميں ايک گھڑی تيار کی اور اسکول لايا تاکہ انجينيرنگ ٹيچر کو دکھائے اور داد وصول کرسکے، مگر ايک دوسرے ٹيچر نے گھڑی کو ديکھا تو بم سمجھا اور اسکول حکام کو اطلاع کردی۔ گھڑی برآمد ہونے پر پوليس کو بلاليا گيا اور پوليس احمد محمد کو گرفتار کر کے لے گئی، تفتيش ہوئی تو حقيقت سامنے آئی، مگر معذرت کسی نے نہيں کی، احمد کے والد کا کہنا ہے کہ مسلم پس منظر ہونے کی وجہ سے احمد پر شک کيا گيا۔ دوسری جانب اسکول کے پرنسپل ڈینیل کیومنگ نے احمد محمد کا نام اسکول سے خارج کر دیا ہے، واقعہ میڈیا میں آنے کے بعد امریکی صدر اوباما نے متاثرہ بچے کو وائٹ ہاؤس آنے کی دعوت دے ڈالی، سوشل میڈیا پر اپنے اکاؤنٹ پر جاری پیغام میں امریکی صدر اوباما نے متاثرہ بچے احمد کو گھڑی کے ہمراہ وائٹ ہاؤس آنے کی دعوت دی ہے۔ اپنے پیغام میں براک اوباما کا کہنا تھا کہ احمد کی بنائی گئی گھڑی شاندارہ ہے، ایسے تجربات اور ایجادات سے ہم بچوں میں سائنس سے متعلق مزید شوق پیدا کرسکیں گے،جو خود امریکا کیلئے خوش آئند ثابت ہوگیا۔ سماء

USA

WHITE HOUSE

MUSLIM

MINOR

BOY

IStandWithAhmed

Tabool ads will show in this div