واشنگٹن پر جنگی دباؤ نہیں چاہتے ہیں، زلمے خلیل زاد

افغان امن ملکی مفادمیں ہے

امریکا کے نمائندہ خصوصی برائے افغان امن عمل زلمے خلیل زاد کا کہنا ہے کہ افغانستان میں امن سے واشنگٹن پر جنگی دباؤ کم ہوگا۔

سماجی رابطے کی سائٹ ٹوئٹر پر افغان امن کیلئے تعینات خصوصی نمائندے زلمے خلیل زاد نے امریکا کے نئے چیئرمین جوائنٹ چیفس آف اسٹاف سے ملاقات کی۔ ملاقات میں دو طرفہ دلچسپی کے امور نیشنل سیکیورٹی سے متعلق تبادلہ خیال کیا گیا۔

 

اپنے بیان میں زلمے خلیل زاد کا کہنا تھا کہ نئے امریکی چیف ملی افغانستان کو اچھی طرح سمجھتے ہیں۔ ہم دونوں ہی اس بات پر اتفاق کرتے ہیں کہ سیاسی طریقے سے ہی معاملات حل ہونے چاہیئے۔

نمائندہ خصوصی کا مزید کہنا تھا کہ افغانستان میں سیاسی حل امریکا کے مفاد میں ہے، افغانستان میں امن آنے سے واشنگٹن پر جنگی دباؤ قبول ہوگا۔ افغانستان میں امن ہمارے اپنے ملکی مفاد میں ہے۔ جنرل مارک ملی کی تعیناتی پر سابق افغان وزیر داخلہ نے بھی ٹوئٹ کرتے ہوئے کہا کہ میں جنرل مارک ملی کو اچھی طرح جانتا ہوں، اور دہشت گردی کے خلاف ان کے اقدامات قابل ستائش ہیں۔

 

افغان جنرل سلنگی کا مزید کہنا تھا کہ دہشت گردوں کے اہداف واضح ہیں، تاہم انہیں اور ان کے سہولت کاروں کو شکست دینے کیلئے ہمیں مل جل کر کام کرنا ہوگا۔

ZALMAY KHALILZAD

MARK MILLEY

Tabool ads will show in this div