دکی میں عطائی ڈاکٹر کی غفلت،2 سالہ بچہ جاں بحق

ڈپٹی کمشنر دکی نے واقعے کا نوٹس لے لیا

بلوچستان کے علاقے دکی میں عطائی ڈاکٹر کے انجکشن لگنے سے 2 سالہ بچہ جاں بحق ہوگیا۔ ملزم کلینک بند کرکے فرار ہوگیا۔ ڈپٹی کمشنر دکی نے واقعے کا نوٹس لے کر رپورٹ طلب کرلی ہے۔

دکی میں مشرقی بائی پاس پر واقع عطائی ڈاکٹر سید نور کے کلینک میں عبیداللہ ناصر کے دوسالہ بچے کو انجکشن لگایا گیا جس سے اس کی حالت غیر ہوگئی۔

بچے کے والد کے مطابق بچے کی طبیعت بگڑنے پر اس کو سول ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں بچہ دم توڑ گیا۔ والد نے بتایا کہ بچے کو پیٹ میں درد ہونے پر عطائی ڈاکٹر کےکلینک میں لایا گیا تھا۔

ایم ایس سول ہسپتال دکی ڈاکٹرجوہر خان شادوزئی نے واقعے کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ بچے کو سول ہسپتال دکی لایا گیا جہاں اس نے طبعیت زیادہ خراب ہونے پر دم توڑ دیا۔

بچے کی موت کی اطلاع ملتے ہی عطائی ڈاکٹر کلینک بند کرکے فرار ہوگیا۔ ڈی سی دکی قربان علی مگسی نے واقعے کا نوٹس لے کر ڈی ایچ او دکی اور ایم ایس سول ہسپتال سے واقعے کی انکوائری کرکے رپورٹ طلب کرلی ہے۔

غلط انجکشن سے انتقال کرجانے والے 2 سالہ بچے شوکت اللہ کے چچا حیات اللہ  نے ایف آئی آر کے لئے درخواست جمع کرادی ہے۔حیات اللہ کی جانب سے جمع کرائی گئی درخواست میں عطائی ڈاکٹر سید نور ولد جماالدین موسی خیل کو ملزم نامزد کیا گیا ہے۔

BALUCHISTAN

Tabool ads will show in this div