ڈینگی 170 ممالک میں پھیل گیا، 27 لاکھ افراد متاثر

ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کے اگست 2019ء کے اعداد و شمار

ماحولیاتی تبدیلی کے بدترین اثرات پھیلنا شروع ہوگئے، دنیا بھر کے 170 ممالک میں ڈینگی کے مریضوں کی تعداد 27 لاکھ تک پہنچ گئی۔ ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن نے مرض سے متعلق اگست 2019ء کی رپورٹ جاری کردی۔

ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کے مطابق دنیا بھر میں ماحولیاتی تبدیلی کے باعث ڈینگی کا مرض تیزی سے پھیل رہا ہے، 1970ء میں صرف 10 ممالک تک محدود رہنے والا یہ مرض اب 170 ممالک کو اپنی لپیٹ میں لے چکا ہے، صرف ماہ اگست میں 27 لاکھ افراد اس مرض سے متاثر ہوئے جبکہ آئندہ 3 عشروں میں یہ تعداد 50 کروڑ تک پہنچنے کا خدشہ ہے۔

مزید جانیے : ڈینگی کے پھیلاؤ کی تحقیقات عالمی اداروں سے کروائی جائے گی

ڈبلیو ایچ او کے ڈینگی کے خاتمے سے متعلق ٹاسک فورس کے سربراہ رامن ویلے اُدھان کے مطابق پاکستان، نیپال، برازیل، بنگلہ دیش، ہنڈوراس، فلپائن سمیت دنیا کے 170 ممالک میں یہ مرض تیزی سے پھیل رہا ہے، جہاں سے بڑی تعداد میں لوگوں کے متاثر ہونے کی رپورٹس آرہی ہیں، بدقسمتی سے اس وقت حالات سنگین ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : کراچی میں ڈینگی وائرس سے مرنے والوں کی تعداد 14 ہوگئی

رپورٹ کے مطابق صرف فلپائن میں ایک ہزار سے زائد افراد ڈینگی سے ہلاک ہوچکے ہیں، ڈینگی سے متاثرہ بیشتر افراد خود ہی ٹھیک ہوجاتے ہیں، اس سے ہلاکت کا خطرہ صرف ایک فیصد ہوتا ہے تاہم علاج سے کہیں زیادہ احتیاط کی ضرورت ہوتی ہے، تاحال اس کے علاج کیلئے کوئی دوا موجود نہیں ہے اور نہ ہی وسیع پیمانے پر منظور شدہ کوئی ویکسین دستیاب ہے۔

مزید جانیے : راولپنڈی میں ڈینگی بے قابو، مزید 150 مریض اسپتال داخل

ماحولیاتی تبدیلی اور مچھروں کی افزائش سے پھیلنے والی بیماریوں پر تحقیق کرنے والے محقق کہتے ہیں کہ ماحولیاتی تبدیلی سے دنیا کی صحت کو لاحق خطرات میں سے ڈینگی ایک ہے، جس کے باعث خدشہ ہے کہ آئندہ 30 برسوں میں 50 کروڑ افراد متاثر ہوسکتے ہیں۔

Tabool ads will show in this div