ڈینگی کے پھیلاؤ کی تحقیقات عالمی اداروں سے کروائی جائے گی

اس بار ڈینگی وائرس کی نوعیت مختلف ہے

اسلام آباد کے علاقے ترلائی میں ڈینگی سیل بنا ديا گيا ہےجبکہ حکومت نے ڈینگی کے پھیلاؤ کی عالمی صحت کے اداروں سے تحقیقات کروانے کا فیصلہ کیا ہے۔

ہفتے کو ڈینگی سیل کے افتتاح کے موقع پرمعاون خصوصی صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے کہا کہ اس بار ڈینگی وائرس کی نوعیت مختلف ہے، ڈینگی کے خاتمے کیلئے موثر اقدامات کئے جا رہے ہیں۔

ڈاکٹر ظفرمرزا نے بتایا کہ اسلام آباد میں 90 ٹیمیں ہنگامی بنیادوں پراسپرے کررہی ہیں، ترلائی کے ڈینگی سیل میں روزانہ  شام کو میٹنگ ہورہی ہے۔ ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ ڈینگی کے تدارک کیلئے اگلے سال کی منصوبہ بندی بھی جاری ہے۔

اس کے علاوہ ڈینگی سے متاثرہ 16 ہزار مریض سامنے آنے پر حکومت نے عالمی صحت کے اداروں سے رابطہ کیا ہے اور ڈینگی کے پھیلاؤ کی تحقیقات کرانے کا فیصلہ کیا ہے۔

یہ تحقیقات عالمی ادارہ صحت، سی ڈی سی (سینٹر فار ڈیزیز کنٹرول اینڈ پریوینشن) امریکہ اورسری لنکا سے کروائی جائیں گی۔عالمی ماہرین چاروں صوبوں اور آزاد کشمیر کا دورہ کریں گے اور ڈینگی لاروا اور وائرس پر تحقیق کریں گے۔

‏ماہرین راولپنڈی اور اسلام آباد میں ڈینگی کے پھیلاؤ کی وجوہات پر بھی غور کریں گے۔ معاون خصوصی صحت ظفر مرزا نے عالمی ماہرین سے ڈینگی کی تحقیقات کی منظوری دے دی ہے۔

HEALTH

Tabool ads will show in this div