پاکستان کی تاریخ کے سب سے بڑے جنسی اسکینڈل میں نیا موڑ آگیا

ویب ایڈیٹر :


قصور : قصور میں بچوں سے زیادتی کی ویڈیو بناکر پیسے بٹورنے کا معاملہ اراضی ہتھیانے کا ڈرامہ نکلا، آر پی او نے بھی تصدیق کردی۔ جب کہ دوسری جانب مقامی افراد کے کہنا ہے کہ قصور کے علاقے میں واقع حسین والا گاؤں میں ایک گینگ نے دہشت پھیلا رکھی ہے جو تقریبا دس سال سے بچوں کو نہ صرف جنسی زیادتی کا نشانہ بناتا ہے بلکہ ان کی ویڈیو بناکر بچوں کے والدین کو بلیک میل بھی کیا جاتا ہے۔

قصور زیادتی اسکینڈل میں سماء نے کھوج لگا لیا، وڈیو اسکینڈل انیس ایکڑ زمین ہتھیانے کا ڈرامہ نکلا، واقعہ دو گروہوں کی پرانی رنجش قرار پایا گیا، جو کہ تیس ایکڑ کی زمین تھی،  پولیس کے مطابق زمین شیرازی گروپ نے لیز پر حاصل کی، جسے ماسٹر ظفر گروپ نے ہتھیانے کے لیے مختلف حربے استعمال کیے۔ آر پی او شیخوپورہ نے بھی سماء کی خبر کی تصدیق کردی۔

اہل علاقہ کا مؤقف :
اس سے قبل بچوں سے زیادتی پر کئی گھنٹوں تک احتجاج ہوتا رہا، توڑ پھوڑ بھی ہوئی اور کارورائی کے لیے پولیس پر دباؤ بھی ڈالا گیا، لیکن آج سماء نے اصل خبر سے پردہ اٹھا دیا۔ دوسری جانب مقامی افراد کے مطابق حسین والا گاؤں میں کرمنلز کا گینگ دس سال سے سرگرم تھا، جو زیادتی کے شکار والدین سے بلیک میل کرکے لاکھوں روپے بھی بٹورے گئے۔ ذرائع کے مطابق اب تک280 بچوں سے زیادتی کی 400 ویڈیوز منظر عام پر آئی ہیں۔ گینگ میں 25 سے زائد لوگ شامل ہیں، جب کہ ان گھنائونے واقعہ پر اہل علاقہ بے بس اور کچھ کرنے سے قاصر ہیں اور پولیس بے حسی کی تصویر بنی ہوئی ہے۔

پس منظر:
واقعہ تب سامنے آیا جب گذشتہ ہفتے زیادتی کا شکار ایک بچے کے والدین اور اہل علاقہ نے احتجاجی مظاہرہ کیا اور پولیس کے عدم تعاون پر پولیس سے مڈبھیڑ ہوگئی ، اس تصادم میں پولیس آفیشلز سمیت متعدد افراد زخمی ہوئے۔ متاثرہ خاندان کا کہنا ہے کہ پولیس سیاسی دباؤ میں آ کر ملزمان کو پروٹوکول دے رہی ہے اور اسی وجہ سے ایک ملزم نے عدالت سے ضمانت بھی کروا لی ہے۔

بدفعلی اور گھناونے کام میں ملوث ملزمان کے کرتوت:
جرم میں شامل ملزمان نہ صرف بچوں سے زیادتی کرتے بلکہ انہیں ایک دوسرے کے ساتھ بھی بدفعلی پر مجبور کیا جاتا ہے، ان کی فلمیں بنائی جاتی ہیں اور پھر عزت کا بھر م رکھنے کے لیے ان کے والدین کو بلیک میل کیاجاتا ہے، کئی واقعات میں بچے خود بھی اپنے گھروں سے زیورات چوری کرکے ان بلیک میلرز کو دے چکے ہیں۔

ذرائع کے مطابق متاثرہ بچوں کا کہنا تھا کہ گینگ میں شامل افراد اسکائپ پر بیرون ملک کسی کو ویڈیو فراہم کرنے اور اس کے بدلے رقم کی بات کرتے ہوئے دیکھا گیا ہے۔ سماء

PUNJAB

PARENTS

RANA SANAULLAH

RPO

SEXUAL

HARRASMENT

Tabool ads will show in this div