چونیاں میں بچوں کے قتل وزیادتی میں ملوث ملزم گرفتار

پندرہ سو ٹیسٹ، ایک ڈی این اے میچ کرگیا، وزیراعلیٰ
AFP_Z80UA
AFP_Z80UA

چونیاں میں 5 بچوں کو زیادتی کے بعد قتل کردیا گیا تھا، پولیس نے ایک ملزم کو ڈی این اے ٹیسٹ میچ ہونے پر گرفتار کرلیا۔ وزیراعلیٰ پنجاب نے بتایا کہ 1500 سے زائد مشتبہ افراد کا ڈی این اے ٹیسٹ کیا گیا تھا۔

قصور کے علاقے چونیاں میں 17 ستمبر کو ایک بچے کی لاش اور 2 کی باقیات ملی تھیں جبکہ ایک اور بچے کی لاش چند روز بعد برآمد ہوئی تھی۔

وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے چونیاں واقعے میں ملوث ایک ملزم کی شناخت کا انکشاف کیا، ان کا کہنا تھا کہ مشتبہ افراد کے ڈی این اے ٹیسٹ مکمل کرلئے گئے ہیں، 1500 سے زائد افراد کے ڈی این ٹیسٹ لئے گئے جن میں سے ایک شخص کا ڈی این اے میچ کر گیا۔

مزید جانیے : چونیاں میں قتل چوتھے بچے کی شناخت ہوگئی

انہوں نے مزید کہا کہ چونیاں میں اغواء کئے گئے فیضان، علی حسنین، سلمان اکرم اور محمد عمران کو زیادتی کے بعد قتل کیا گیا تھا، پنجاب پولیس اور سیکیورٹی اداروں کو شاباش پیش کرتا ہوں، ملزم  کے حوالے سے مزید تفتیش کی جارہی ہے۔

وزیراعلیٰ پنجاب نے ایک بار پھر اعلان کیا کہ قصور میں چائلڈ پروٹیکشن سینٹر قائم کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

چونیاں: بچوں کوقتل کرنیوالے کے سرکی قیمت 50 لاکھ مقرر

اس سے قبل بھی قصور میں کئی بچیوں اغواء کے بعد زیادتی کا نشانہ بنا کر قتل کردیا گیا تھا، زینب قتل کیس میں ایک مجرم عمران کو سزائے موت بھی دی جاچکی ہے۔

چونياں ميں زيادتی کے بعد قتل کئے گئے بچے سلمان کے والد نے ملزم کو سر عام سزا دينے کا مطالبہ کر ديا۔ محمد اکرم نے سماء سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہمارا بچہ تو واپس نہيں آسکتا مگر ملزم کو پکڑنے کی خبر سُن کر تسلی ہوئی۔

دوسری جانب وزیراعظم عمران خان نے بچوں کے اغواء کے واقعات کی روک تھام کیلئے ’’میرا بچہ الرٹ‘‘ کے نام سے خصوصی ایپلی کیشن بنانے کا حکم دیا ہے۔

چونیاں: بچوں کے قتل کا ملزم گرفتار کرلیا، پولیس کادعویٰ

وزیراعظم کا کہنا ہے کہ ’’میرا بچہ الرٹ‘‘ ایپلی کیشن 2 ہفتوں میں تیار کرلی جائے گی، یہ ایپ پاکستان سٹیزن پورٹل سے منسلک ہوگی، کسی بھی واقعے میں بچے کی برآمدگی اور کیس پر پیشرفت پر نظر رکھی جاسکے گی۔

USMAN BUZDAR

CHUNIAN MURDERS

Tabool ads will show in this div