ارکان پارلیمینٹ کے اثاثوں کی تفصیلات جاری

Nov 30, -0001

اسٹاف رپورٹ


اسلام آباد: الیکشن کمیشن  نے ارکان پارلیمینٹ کے اثاثوں کی تفصیلات جاری کر دیں، پارلیمانی پارٹیوں کے سربراہوں میں وزیراعظم نواز شریف امیر ترین جبکہ محمود خان اچکزئی سب سے کم اثاثوں کے مالک نکلے،

عوامی نمائندوں کی دولت کا حساب کتاب جاری،،، الیکشن کمیشن نے کھول دی سب کی پٹاری،،، کسی کی زرعی اراضی ہے زیادہ تو کسی نے کر رکھی ہے بڑی سرمایہ کاری۔

پارلیمانی رہنماؤں میں وزیراعظم نوازشریف 8 ارب ، 79 کروڑ، 90 لاکھ  کے اثاثوں کے مالک نکلے۔ ان کے پاس 1754 کنال اراضی اور 4 گاڑیاں ہیں۔

قائدحزب اختلاف خورشید شاہ 3 کروڑ 60 لاکھ کی جائیداد، 10 ایکڑ زرعی اراضی، اسلام آباد اور سکھر میں ایک ایک پلاٹ کے مالک ہیں۔ ان کے اکاؤنٹ میں 57 لاکھ ، کاروبار میں  50 لاکھ اور 10 لاکھ کا فرنیچر بھی ہے۔

تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کے اثاثے کم ہو گئے، ان کے پاس 2012ء میں 3 کروڑ 2 لاکھ کے اثاثے تھے جو اب کم ہو کر 2 کروڑ 96 لاکھ  روپے رہ گئے ہیں۔ ان کے دو بنک اکاؤنٹ، ایک پراڈو گاڑی اور دوہزار کنال اراضی بھی ہے۔ پیپلز پارٹی کے صدر مخدوم امین فہیم 200 ایکڑ اراضی اور کروڑوں کی جائیداد کے مالک ہیں۔ ان کے پاس 1 کروڑ 35 لاکھ کی 4 گاڑیاں اور اکاؤنٹ میں 46 لاکھ روپے ہیں۔

ایم  کیو ایم کے فاروق ستار صرف 36 لاکھ روپے کی جائیداد کے مالک ہیں، ان کے پاس 5لاکھ کی گاڑی ،75 ہزار کا سونا، 14 لاکھ کے دو فلیٹ اور بنک میں صرف 12718 روپے ہیں۔ پختونخوا ملی عوامی پارٹی کے محمود خان اچکزئی 5 لاکھ روپے نقد، 3 لاکھ کےفرنیچر، 2 گاڑیوں اور 30 تولے سونے کے مالک ہیں۔ اچکزئی کے پاس 3  کلاشنکوف اور 2 مکان ہیں۔

مولانا فضل الرحمان 40 لاکھ روپے کے دو مکانوں، 9 لاکھ کے زیورات،60ہزار روپے کے فرنیچر کے مالک ہیں جبکہ بنک اکاؤنٹ میں 16 لاکھ روپے ہیں۔

اے این پی کے غلام احمد بلور 3 کروڑ 75 لاکھ روپے جائیداد،20 لاکھ کے گھر ،90 لاکھ کی گاڑی اور 5 لاکھ روپے  نقد کے مالک ہیں، انہوں نے ایک کروڑ روپے سے زیادہ کی سرمایہ کاری بھی کر رکھی ہے۔

شیخ رشید کے مجموعی اثاثے 3 کروڑ 70 لاکھ روپے کے ہیں ان کے پاس چھ لاکھ کا اسلحہ بھی ہے۔ سماء

کی

کے

جاری