ایل این جی کیس،2 افسران وعدہ معاف گواہ بننے کیلئے تیار

ایل این جی معاہدہ شاہد خاقان کیلئے مشکل بننے لگا

ایل این جی ٹرمنل کے بعد قطر سے ایل این جی معاہدہ بھی شاہد خاقان عباسی کے لیے مشکل کا سبب بننے لگا۔ نیب ٹرمنل ریفرنس اکتوبر میں دائر کرے گا تو ساتھ ہی معاہدے کی تحقیقات بھی شروع کردی گئی ہیں۔ ملزم کی ہمشیرہ نے بھائی کو جیل میں شاہانہ سہولیات نہ دیئے جانے کیخلاف درخواست بھی دائر کردی ہے۔

وزارت پٹرولیم میں مبینہ گھپلوں پر شاہد خاقان عباسی کی مشکلات بڑھنے لگی ہیں۔ ایل این جی کیس میں وزارت کے 2 افسران وعدہ معاف گواہ بننے کو تیار ہوگئے ہیں۔

نیب راولپنڈی نے آئندہ ماہ ریفرنس دائر کرنے کی تیاری کرلی ہے۔ قطر سے معاہدے کی الگ سے انکوائری بھی کی جارہی ہے۔

اطلاعات یہ بھی ہیں کہ دوران تفتیش سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نیب کو کوئی بھی تسلی بخش جواب نہ دے سکے۔

اس کے علاوہ سابق وزیراعظم  نے جیل میں شاہانہ سہولیات نہ ملنے کا بھی شکوہ کیا ہے اور احتساب عدالت میں درخواست دائر کردی ہے۔ شاہد خاقان عباسی نے جیل میں الگ رہائش، دو خدمت گار قیدی مانگ لئے۔

انھوں نے بیڈ، کرسی، کمپیوٹر،پرنٹر، اے سی، فریج، ٹی وی، ٹوسٹر، ٹی کیٹل، اوون اور پرہیزی کھانا بنانے کیلئے 2 خانسامے دینے کا بھی مطالبہ کیا ہے۔ مزید یہ کہ انھوں نے اخبار، کتابیں، جرنلز اور دیگر اشیاء اپنےخرچے پر رکھنے کی اجازت بھی مانگ لی ہے۔

احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے درخواست پر جیل سپرنٹنڈنٹ سے پیر تک جواب طلب کرلیا ہے۔

 

LNG Terminal

Tabool ads will show in this div