مشیر خارجہ سرتاج عزیز اہم ایجنڈہ لے کر کابل روانہ

ویب ایڈیٹر:

اسلام آباد: قومی سلامتی اور خارجہ امور کیلئے وزیراعظم کے مشیر سرتاج عزیز افغان قیادت سے دہشتگردوں کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کرنے ایک روزہ دورے پر کابل روانہ ہو گئے۔

سرتاج عزیزافغان صدر اشرف غنی سمیت اعلیٰ قیادت سے ملاقاتوں میں پاکستان مخالف بیانات بند کرنے کے مطالبے کے علاوہ افغان اور بھارتی ایجنسیوں کے گٹھ جوڑ کے ثبوت بھی پیش کریں گے۔

مزید پڑھیے: پاکستان نے افغانستان اور بھار ت ایجنسیوں کے گٹھ جوڑ کے ثبوت اکٹھے کرلئے

سرتاج عزیز ایک ایسے وقت میں افغانستان جا رہے ہیں جب افغان صدر اور کئی وزراء کے بیانات کے علاوہ بھی پاکستان مخالف مہم منظم انداز میں جاری ہے۔

سفارتی ذرائع کے مطابق مشیر خارجہ سرتاج عزیز پاکستان میں شورش کے واقعات میں افغان خفیہ ایجنسی این ڈی ایس اور بھارتی خفیہ ایجنسی را کے ملوث ہونے کے ناقابل تردید ثبوت لیکرجارہے ہیں۔ افغان صدراور وزیرخارجہ سے ملاقاتوں میں تمام ثبوت پیش کر کے پاکستان مخالف کارروائیاں اور پروپیگنڈا مہم بند کرنے کا مطالبہ کریں گے۔

مشیر خارجہ افغان حکومت سے اس معاملے پر بھی بات کریںگے کہ ملا فضل اللہ افغانستان میں کھلے عام گھومتا ہے لیکن اس کیخلاف کاروائی نہیں کی جا رہی ۔

ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ سرتاج عزیز، افغان حکومت اور طالبان سے مذاکرات بحال کرنے کی تجویز نہیں دیں گے ۔ سماء

KABUL

sartaj aziz

ASHRAF GHANI

Tabool ads will show in this div