پولی کلينک سے اڈيالہ جيل منتقلی پر فریال تالپور پولیس پر برس پڑیں

اسلام آباد پولي کلينک ميں زير علاج فريال تالپور کو اڈيالہ جيل منتقل کرديا گيا ہے۔

نيب کے زيرحراست رکن سندھ اسمبلي اسلام آباد کے پولی کلینک میں موجود تھیں، جہاں اسلام ٓاباد پولیس نے رات 12 بجے فریال تالپور کو پولی کلینک سے جیل منتقل کیا۔ جيل منتقلي کے دوران فريال تالپور نيب ٹيم  اور جيل پوليس پر برس پڑيں اور جذباتي ہوگئيں۔

 

میڈیا سے گفت گو میں فریال تالپور کا کہنا تھا کہ بیمار مریض سے پہلے پوچھا جاتا ہے، کیا کہ ان کے بیوی بچے نہیں ہیں؟۔ انہوں نے مزید کہا کہ رات گئے مريض کو جيل منتقل کيا جا رہا ہے،يہ کوئي طريقہ ہے، يہ کيسا نظام ہے، يہ انصاف نہيں، خدا ان سے پوچھے گا۔

فریال تالپور کی منتقلی پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے پی پی چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ کون سا قانون اس بات کی اجازت دیتا ہے کہ ڈاکٹروں کی ایڈوائس کے بر خلاف ایک قیدی خاتون کو رات گئے جیل منتقل کردیا جائے؟۔ کیا ان کی بہنیں نہیں ہیں، ہم مسلمان لوگ ہیں، ان لوگوں نے تو مسلمانی ہی چھوڑدی ہے۔

واضح رہے کہ فریال تالپورکو 19 اگست کو دوبارہ احتساب عدالت پیش کیا جائے گا۔

FARYAL TALPUR

POLY CLINIC

Tabool ads will show in this div