شریف خاندان نے پیسہ واپس نہ کیا تو جائیدادیں ضبط ہونگی، شہزاد اکبر

وزیراعظم کے معاون خصوصي برائے احتساب شہراد اکبر کہتے ہیں کہ شريف خاندان کے کيسوں کا فيصلہ آنے کے بعد اگر انہوں نے پيسہ واپس نہ کيا تو ان کي جائيداديں ضبط کي جائيں گی۔

سماء کو خصوصي انٹرويو ميں معاون خصوصی برائے احتساب نے کہا کہ شريف فيملي کے کيسوں ميں انہوں نے پيسہ صرف خود کھايا جبکہ اومني گروپ کيس ميں پيسہ مل کر کھايا گيا۔

شہزاد اکبر نے کہا کہ اسحاق ڈار کي ايک ارب کي جائيداد اور پيسہ ضبط کر چکے ہيں۔ عيد کے بعد اسحاق ڈار کے گھر کي نيلامي کريں گے۔

معاون خصوصی نے کہا کہ جنہوں نے ملک کا پيسہ لوٹا اُن سے ريکوری شروع ہوگئی ہے۔ پبلک آفس ہولڈر اور پرائيوٹ شخصيات سے اربوں روپے ريکور کيے جس میں سے پرائيويٹ کيسز ميں ساڑھے 9 ارب ريکور ہوئے جبکہ پبلک آفس اومني کيس ميں ڈھائي ارب ريکور ہوچکے ہيں۔

شہزاد اکبر نے کہا کہ يوسف عباس کے اکاونٹ ميں ٹي ٹيز کے علاوہ 80 کروڑ آئے۔ ان 80 کروڑ اور ٹي ٹيز کا پيسہ ملا کر شميم شوگر مل بن جاتي ہے۔ ناصر عبداللہ اومني کيس ميں وعدہ معاف گواہ بن چکے ہيں۔

انہوں نے کہا کہ خواجہ آصف کے متعلق کچھ ٹرانزيکشن کي تفتيش کر رہے ہيں۔ عيد کے بعد شہباز شريف کے خلاف مزيد شواہد سامنے لائيں گے۔

corruption Cases

SHARIF FAMILY

SHAHZAD AKBAR

Tabool ads will show in this div