پرانی سرکلر ریلوے بحال کرنا قابل عمل نہیں رہا، سندھ حکومت کی رپورٹ

کراچي کي اصل شکل ميں بحالي سے متعلق اجلاس میں سندھ حکومت نے سرکلر ریلوے کی بحالی سے ہاتھ اٹھالیے ہیں۔

سندھ حکومت کی رپورٹ میں کراچی سرکلر ریلوے منصوبے کی بحالی کی مخالفت کردی گئی ہے۔ رپورٹ ميں بتايا گيا ہے کہ  کے سي آر کے 24 اسٹيشنز پر تجاوزات قائم ہوچکي ہیں، اگر یہ بحال ہوئي تو شہر چوک ہوجائے گا۔

رپورٹ میں تحریر ہے کہ پرانی سرکلر ریلوے بحال کرنا قابل عمل نہیں رہا ہے۔ رپورٹ میں مزید بتایا گیا ہے کہ سرکلر ریلوے کی اراضی پر کہیں گرین لائن تو کہیں پل بن چکے ہیں۔

کراچی سرکلر ریلوے، سپریم کورٹ نے 9 اگست کو حتمی رپورٹ مانگ لی

رپورٹ میں نشان دہی کی گئی کہ سرکلر ریلوے کی جگہ بڑے پیمانے پر دیگر منصوبے شروع کررہے ہیں، کراچی ٹرانسپورٹ کے دیگر منصوبوں سے روزانہ 6 لاکھ افراد سفر کرسکیں گے۔

رپورٹ میں درخواست کی گئی ہے کہ ٹرام اور سرکلر ریلوے سے متعلق فیصلے پر نظر ثانی کی جائے۔

Karachi Mass transit

Tabool ads will show in this div