کراچی پولیس چیف نے تھانوں سے اسپيشل پارٹياں ختم کرنے کا حکم دیدیا

نئے پاکستان ميں پراني پوليس نہيں چلے گي، نئے کراچي پوليس چيف غلام نبي ميمن نے پہلي ميٹنگ ميں ہي اکھاڑ پچھاڑ کرڈالي۔

کراچي پوليس چيف غلام نبي ميمن نے تھانوں سے اسپيشل پارٹياں (چھامہ مار ٹیمیں) ختم کرنے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ تھانوں ميں اسپيشل پارٹيوں کي کوئي ضرورت نہيں ۔

 انہوں نے کہا کہ پہلي بار ايس ايچ اوز کو تنخواہ کے علاوہ ايک لاکھ روپے ماہانہ الاؤنس ديا جائے گا، تمام تھانوں کو ماہانہ خرچ بھي ديا جائے گا ۔

ان کا کہنا تھا کہ چار ماڈل تھانے بنيں گے جبکہ چار پولیس اسٹیشنزکو ملا کرایک تھانہ بنایا جائے گا، اب کراچي ميں مجموعي طور پر صرف چون تھانے ہوں گے۔

اس اقدام سے فیروزآباد پولیس اسٹیشن بہادرآباد پولیس اسٹیشن میں ضم ہوجائے گا جبکہ بوٹ بیسن پولیس اسٹیشن کلفٹن پولیس اسٹیشن میں ضم ہوجائے گا ۔

کراچي پوليس چيف نے شہريوں سے بدتميزي پرٹريفک پوليس کي بھي کلاس لے لي، ايس ايچ او کو فارغ کرنے کيلئے کرپشن کا الزام ہي کافي ہوگا۔

یاد رہے کہ گزشتہ دنوں سندھ پولیس میں اعلیٰ سطح پر تبادلے اور تقرریوں کی گئی ، جس کے تحت کراچی پولیس کے چیف امیر شیخ کو عہدے سے ہٹا دیا گیا اور ان کی جگہ غلام نبی میمن کو کراچی پولیس کا نیا سربراہ مقرر کیا گیا تھا۔

 

POLICE CHIEF

Tabool ads will show in this div