پاکستان میں ریموٹ کنٹرول جمہوریت نہیں چل سکتی، خواجہ سعد رفيق

Jul 11, 2019

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2018/07/Saad-Rafiq-Case-Lhr-Pkg-11-07.mp4"][/video]

احتساب عدالت نے پيراگون ہائوسنگ کيس ميں خواجہ سعد رفيق اور سلمان رفيق کے جوڈيشل ريمانڈ ميں پانچ روز کي توسيع کر دي، سعد رفیق نے حکومت پر تنقيد کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں ریموٹ کنٹرول جمہوریت نہیں چل سکتی ۔

احتساب عدالت میں پیراگون اسکینڈل کی سماعت ہوئی، جس میں جیل حکام نے پیراگون اسکینڈل میں گرفتار خواجہ برادرن کو پیش کیا۔ سماعت کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سعد رفيق کا کہنا تھا کہ اپوزیشن رہنماؤں کو جیل میں ڈالنے سے ملک نہیں چلے گا۔

سعد رفيق نے کہا کہ ملک میں ریموٹ کنٹرول جمہوریت نہیں چل سکتی پہلے بھی تجربے کر چکے ہیں اب بھی ناکام ہو گا۔

انہوں نے کہا کہ اپوزيشن جماعتيں حکومت گرانا نہیں چاہتیں ليکن مفاہمت کی پالیسی کو کمزوری سجھا گیا۔

سعد رفيق نے کہا کہ پلوں کے نیچے سے پانی نکل رہا ہے جب حکومت بات کرنا چاہیے گی تو پھر کوئی طبقہ ان سے بات نہیں کرے گا۔

احتساب عدالت نے پیراگون ہاوسنگ کيس کے تین ملزمان ندیم ضیا، عمر ضیا اور فرحان کو اشتہاری قرار دینے کی کارروائی شروع کر دی جبکہ ریفرنس کی نقول خواجہ برادران کو دينے کے ليے 16 جولائی کی تاریخ مقرر کر دی۔