مہنگائی فیصل آباد کا ایمبرائیڈری سیکٹر لے ڈوبی، 2 لاکھ مزدور بیروزگار

Jun 28, 2019
[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2018/06/Fsd-Embeiodery-Sector-Pkg-28-06.mp4"][/video]

حالیہ بجٹ اور مہنگائی کے باعث فيصل آباد ميں ٹیکسٹائل انڈسٹری تباہی کے دہانے پر پہنچ گئی۔ ایمبرائيڈری سیکٹر کے 4 ہزار سے زائد یونٹس بند ہونے سے 2 لاکھ سے زائد مزدور بے روزگار ہوگئے۔

پنجاب کے صنعتی شہر فیصل آباد میں ایمبرائیڈری کے 4 ہزار سے زائد یونٹس ہیں۔ صنعتکاروں کا کہنا ہے کہ حالیہ بجٹ میں اضافی ٹیکسز اور مہنگائی کے طوفان کے باعث ایک ہفتے کے اندر شہر کا ایمبرائيڈری سیکٹر مکمل طور پر بند ہوگیا جس کے باعث 2 لاکھ سے زائد مزدور بے روزگار ہوگئے ہیں۔

ایمبرائيڈری یونٹس کے مالکان آج (جمعہ) سے مکمل تالہ بندی کردی ہے اور ہفتہ سے احتجاجی تحریک کا اعلان کردیا ہے۔

ایمبرائیڈری انڈسٹری مالکان کا کہنا ہے کہ موجودہ صورت حال میں صنعتیں چلانا ممکن نہیں ہے۔ اس لئے ہم نے بے روزگار ہونے والے مزدوروں کے ساتھ ملکر سڑکوں پر نکلنے کا فیصلہ کیا ہے۔

صنعتوں کی بندش نے ملکی معیشت کے ساتھ 2 لاکھ سے زائد مزدوروں کے مستقبل پر بھی سوالیہ نشان کھڑا کردیا ہے۔ ایک مزدور نے سماء ٹی وی سے بات کرتے ہوئے کہ وہ اکیلا کمانے والا اور کھانے والے 12 افراد ہیں۔ گزشتہ 12 سال سے اسی فیکٹری میں کام کرکے گھر کا نظام چلاتا رہا۔ آج فیکٹری کو تالا لگ گیا ہے۔ ہمیں سمجھ نہیں آتا اب گھر کا چولہا کیسے جلائیں اور بچوں کی فیسیں کہاں سے دیں۔

INDUSTRY

Tabool ads will show in this div