خاکروب کیلئے کرسچن ہونے کی شرط، پاک فوج نے اشتہار میں تبدیلی کردی

پاکستان آرمی نے سوشل میڈیا پر تنقید کے بعد مجاہد فورس میں بھرتیوں سے متعلق اشتہار میں تبدیلی کردی ہے۔ اس اشتہار میں خاکروب کی پوسٹ کیلئے کرسچن ہونے کی شرط لگائی گئی تھی۔

گزشتہ دنوں پاکستان آرمی نے مجاہد فورس میں بھرتیوں کے لیے اخباروں میں ایک اشتہار شائع کروایا تھا جس میں ڈرائیورز، سپاہی، باورچی، ٹیلر، کارپنٹر، موچی اور خاکروب کی پوسٹوں کے لیے درخواستیں طلب کی گئی تھیں۔

اشتہار میں دیگر تمام پوسٹوں کے لیے مطوبہ تعلیم اور مہارت کو ضروری قرار دیا تھا جبکہ خاکروب کیلئے کرسچن ہونا لازمی قرار دیا گیا تھا۔

 

یہ اشتہار سوشل میڈیا پر موضوع بحث بنا اور سماجی کارکنان نے اس کو تنقید کا نشانہ بنایا جس پر آرمی کی جانب سے اشتہار میں تبدیلی کی گئی ہے۔ پنجاب اسٹریٹیجک ریفارمز یونٹ کے سابق سربراہ سلمان صوفی نے تبدیل شدہ اشتہار کو ٹوئٹر پر شیئر کیا ہے۔

 

سماء ڈیجیٹل سے بات کرتے ہوئے سلمان صوفی نے کہا کہ ’غلطی‘ ٹھیک کرنے پر ہم شکر گزار ہیں۔ عام طور پر کرسچن کمیونٹی کو سینیٹری ورکرز سمجھا جاتا ہے اور ہم اس چاہتے تھے یہ تصور ختم ہوجائے۔

انسانی حقوق پر کام کرنے والی ایڈووکیٹ میری جیمز گل نے بھی پیر کو ایک ٹوئیٹ میں پاک فوج کے ترجمان سے اس امتیازی سلوک کا نوٹس لینے کا مطالبہ کیا۔

 

دیگر سماجی کارکنان نے بھی اس معاملے پر آواز اٹھائی اور اسے ایک مذہبی طبقے کے خلاف امتیازی سلوک قرار دیا۔