میگا منی لانڈرنگ، نیب نے ریفرنس کی حتمی نقول احتساب عدالت میں جمع کرا دیں

PAKISTAN-POLITICS-ELECTIONS
PAKISTAN-POLITICS-ELECTIONS

نیب نے میگا منی لانڈرنگ ریفرنس کی حتمی نقول احتساب عدالت میں جمع کرا دیں، عدالت نے فرد جرم عائد کیلئے نقول ملزمان کو فراہم کرنے کا حکم دے ديا، دوران سماعت آصف زرداری دیگر ملزمان کے وکیل بن گئے، جج سے دلچسپ مکالمے پر قہقہے گونج اُٹھے۔

جعلی اکاؤنٹس میگا منی لانڈرنگ میں بڑی پیشرفت سامنے آئی ہے جس میں تین ملزمان نمر مجید،ذوالقرنین مجید اور علی کمال مجید نے بریت کی درخواست دے دی۔

ملزمان نے مؤقف اپنایا ہے کہ ہمارا اس کیس سے کوئی تعلق نہیں، ملزمان کی درخواست پر نیب سے جواب طلب کرلیا گیا ہے۔

ملزمان کو ہتھکڑی میں دیکھ زرداری صاحب سے رہا نہ گیا روسٹرم پر کھڑے ہوکر کہا کہ عدالت کا فیصلہ جو بھی ہو نیب تو سلوک اچھا کرے، ملزمان کوئی سماج دشمن عناصر تو نہیں، جج ارشد ملک نے ریمارکس دیئے کہ سماج دشمن کے علاوہ اناج دشمن بھی ہوتا ہے جس پر کمرہ عدالت قہقوں سے گونج اٹھا۔

عبدالغنی مجید کی طبی سہولیات دینے کی درخواست پر جج نے دلچسپ ریمارکس دیئے کہا نیب ہیڈکوارٹر کو کسی اسپتال میں ہی منتقل نہ کر دیں اِس کیس میں جو گرفتار ہوتا ہے بیمار ہو جاتا ہے ۔

آصف زرداری نے کہا کہ ہم ایسے بھی کمزور نہیں صاحب، میں نے 13 سال قید تنہائی کاٹی ہے مجھے کچھ نہیں ہوا۔

جج کا کہنا تھا سب آپ جیسے تو نہیں ہوتے کچھ لوگ شیر سے بھی لڑ جاتے ہیں اور کچھ سانپ سے بھی ڈر جاتے ہیں ۔

زرداری صاحب نے موقع دیکھ کر چوکا لگا دیا کہا وہ تو ہے ہمارا وزیراعظم تو چھپکلی سے ڈرتا ہے باہر آکر بھی یہی بات دہرا دی ۔

ملزمان حسین لوائی اور طحٰہ رضا کی عدم پیشی پر وکیل صفائی نے تشویش کا اظہار کیا اور کہا کہ نیب نے کہیں اُنہیں مار تو نہیں دیا ۔

نیب کی جانب سے ریفرنس کی حتمی نقول عدالت میں جمع کرادی ، عدالت نے فرد جرم کیلئے نقول ملزمان کو فراہم کرنے کا حکم دے کر مزید سماعت 8 جولائی تک ملتوی کر دی گئی۔

 

ZARDARI

Mega Money Laundering Case

Tabool ads will show in this div