سندھ محکمہ تعلیم کے ملازمین کا تمام کمپیوٹرائزڈ ریکارڈ غائب

 

محکمہ تعلیم سندھ کی نااہلی کا ایک اور ثبوت سامنے آگیا۔ محکمے کے تمام ملازمین کا ڈیٹا سسٹم سے غائب ہونے کا انکشاف ہوا ہے، وزیر تعلیم نے سابق آئی ٹی انچارج شاہد ابڑو کو عہدے سے ہٹایا تھا، سابق آئی ٹی افسر نے جاتے جاتے سسٹم کا تمام تر ڈیٹا اڑا دیا۔

ڈائریکٹرایچ آر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ سندھ تحسین فاطمہ نے بتایا کہ محکمہ تعلیم سندھ کے ملازمین کی پنشن،آئی ڈیز، بائیو میٹرک کی تفصیلات سسٹم سے غائب ہوگئی ہیں، محکمہ تعلیم کی ویب سائٹ بھی بند ہوگئی ہے۔

ڈاریکٹرایچ آر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ نے بتایا کہ جعلی آئی ڈیز کو کھولنے پر شاہد ابڑو کا تبادلہ کردیا گیا تھا،ان تمام تر معاملات کے پیچھے سابق آئی ٹی انچارج شاہد ابڑو کا ہاتھ ہے۔

آئی ٹی سسٹم کی تباہی کے حوالے سے دورہ کرنے والی نجی ٹیم نے بھی سسٹم کے مکمل ناکارہ ہونے کی تصدیق کردی ہے۔ محکمہ تعلیم سندھ پریشان ہے کہ اب ملازمین کی تنخواہیں، پنشن اور تبادلے کے آرڈر کیسے جاری ہوں گے۔

سیکریٹری تعلیم نے محکمہ تعلیم کے آئی ٹی سسٹم کی خرابی پر ایکشن لیتے ہوئے 3 رکنی کمیٹی قائم کردی ہے۔ ریفارمز سپورٹ یونٹ کے سربراہ معاملے کی انکوائری کی سربراہی کریں گے،3 رکنی ٹیم کو 5 روز میں ذمہ داران کی نشاندہی کرکے رپورٹ جمع کرنے کی ہدایت کی گئی ہے،ذمہ داران کے تعین کے بعد نوکری سے بھی فارغ کیا جاسکتا ہے۔

School education and literacy department

Education system in Sindh

Tabool ads will show in this div