لاہور خود کش دھماکا، مقدمہ درج،7 کلو دھماکا خیز مواد استعمال ہوا

May 08, 2019
[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2018/05/Blast-investigation-Lhr-pkg-08-05.mp4"][/video]

لاہور میں داتا دربار کے باہر خود کش دھماکے کا ٹارگٹ پوليس تھی،دھماکے ميں 7 کلوگرام بارودي مواد استعمال کيا گيا، واقعے کا مقدمہ درج کرلیا گیا ہے۔

بدھ کی صبح لاہور میں ہونے والے خود کش حملےميں4اہلکاروں سميت10افرادشہيد اور20زخمی ہوئے، حملہ آورکي عمر20سے22سال کےدرميان تھی۔

پولیس نے خودکش دھماکے کا مقدمہ درج کرلیا ہے، مقدمے ميں قتل،اقدام قتل اور دہشت گردي کي دفعات شامل کی گئی ہیں، ایف آئی آر میں خودکش بمبار سميت3افراد شامل ہيں۔ خود کش بمبار کي سي سي ٹي وي فوٹيج  میں حملہ اور کو شيش محل روڈ سے داتا دربارکي طرف آتا دیکھا جاسکتا ہے۔

ہم گھر سے نکلتے ہی شہید ہونے کیلئے ہیں، ٹریفک وارڈن

تفتيشي ٹيموں کو متاثرہ جگہ سے بال بيرنگ مل گئے ہيں جن کي مدد سے دھماکہ خيز مواد کي نوعيت کا تعين کيا جارہاہے۔ آئی جی پنجاب عارف نواز نے بتایا کہ واقعے میں 7 کلو دھماکا خيز مواد استعمال ہوا۔

لاہور داتا دربار، پولیس وین کے قریب خودکش حملہ،10 افراد شہید، متعدد زخمی

حملہ آورکي شناخت کےلئے  اس کے جسماني اعضاء فرانزک ليبارٹري ميں بھجوا دئيے گئے ہيں ، سہولت کاروں تک پہنچنے کے لئے  داتا دربار کے اطراف کي جيوفينسنگ کرائي جائے گي جبکہ سيف سٹي کيمروں کي مدد سے  دھماکے کے وقت موقع پر موجود مشتبہ افراد کي نشاندہي بھي کي جارہي ہے۔

lahore blast

Lahore Crime

Sufi shrine

Tabool ads will show in this div