کراچی کی مختلف شاہراہوں پر بدترین ٹریفک جام

 

کراچی کے مختلف علاقوں میں ٹریفک کے دباؤ کے باعث اہم شاہراہوں پر شدید ٹریفک جام ہو گیا ۔

ٹريفک پوليس کے مطابق کراچي پريس کلب پر نرسنگ اسٹاف کی جانب سے احتجاج کے باعث راستے بند کيے، جبکہ فوارہ چوک سے گورنر ہاؤس اور وزیراعلیٰ ہاؤس جانے والاروڈ بھی بند کيا گيا ہے۔

ٹريفک پوليس کا کہنا ہے کہ ايم آر کياني روڈ کو مظاہرين کي ممکنہ پيش قدمي کي وجہ سے بند کيا گیا ہے۔

راستے بند ہونے کی وجہ سے صدر، ايمپريس مارکيٹ، جمشيد روڈ، لائنز ايريا اور شاہراہ فيصل پر نرسري سے ميٹرول جانے والے ٹريک پر ٹريفک جام ہوگیا۔

زيب النسا اسٹريٹ اور کوريڈور تھري پر بھي گاڑيوں کي لمبی قطاريں لگی ہوئی ہیں۔

شہر کے مختلف علاقوں میں ٹریفک پولیس اہلکار نہ ہونے کی وجہ سے گاڑیوں کی لمبی قطاریں لگ گئیں، شہری منٹوں کا سفر گھنٹوں میں طے کرنے پر مجبور ہیں ۔

ڈي آئي جي ٹريفک جاوید مہر کا کہنا تھا کہ اہلکار کليئرنس کيلئے سڑکوں پر موجود ہيں اور سڑکيں کليئر کرنے کي کوششيں کر رہے ہيں۔

TRAFFIC POLICE

karachi traffic jam

nursing staff protest

Tabool ads will show in this div