افغانستان کے عوام نے اپنے مستقبل کا فیصلہ خود کرنا ہے،شاہ محمود

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ افغان امن عمل کیلئے پاکستان سنجیدہ کوششیں کر رہا ہے، خطے میں امن کیلئے مختلف تنظیمیں بھی کردار ادا کر رہی ہیں، تاہم افغانستان میں حقیقی امن کی کنجی افغان عوام کے ہاتھ میں ہے، افغان عوام کو اپنے مستقبل کا فیصلہ خود کرنا ہے۔

اسلام آباد میں ہونے والے پاکستان اور افغانستان دوطرفہ مذاکرات کے ساتواں دور میں مذاکراتی سیشن میں گفت گو کرتے ہوئے پاکستانی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ افغان امن عمل کیلئے اب تک ہونے والی پیش رفت کو سراہتے ہیں، خطے میں امن کیلئے مختلف تنظیمیں کردار ادا کر رہی ہیں، افغانستان کے عوام نے اپنے مستقبل کا فیصلہ خود کرنا ہے۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ افغان امن عمل کی کامیابی کیلئے پاکستان کوشش کر رہا ہے، افغانستان میں امن خطے میں مربوط روابط کیلئے ضروری ہے، اس سلسلے میں مختلف ممالک کے دورے بھی کرچکا ہوں، افغانستان میں امن خطے میں مربوط روابط کیلئے ضروری ہے، پاکستان کی سنجیدہ کوششوں کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ پاکستان نے افغان عوام کیلئے کابل میں جناح اسپتال کا تحفہ دیا، افغانستان میں امن خطے میں مربوط روابط کیلئے ضروری ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ خطے میں تجارت کے فروغ کیلئے افغانستان میں امن ناگزیر ہے، یہ بات بھی دنیا مانتی ہے کہ کوئی بڑی طاقت آج تک افغانستان میں کامیاب نہیں ہوسکی، وزیر خارجہ نے ایک بار پھر اس عزم کا اعادہ کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان افغانستان میں پائیدار امن کیلئے کردار ادا کرتا رہے گا، تاہم افغانستان کے عوام نے اپنے مستقبل کا فیصلہ خود کرنا ہے، افغانستان کا مفاد پاکستان کا مفاد ہے، افغان امن عمل کی کامیابی کیلئے پاکستان کوشش کر رہا ہے۔

تجارتی تعلقات کو مزید وسعت دینے سے متعلق پاکستانی وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ افغانستان کیساتھ ریل اور سڑک کے ذریعے تجارت ہوتی ہے، پاکستان اور افغانستان کے مفادات مشترکا ہیں، جب کہ پاکستان تجارتی تعلقات کو مزید بڑھانا چاہتا ہے اور اس کیلئے ساز گار حالات ضروری ہیں، ہمیں تاریخ سے سبق سیکھ کر بہترین مواقع سے استعفادہ کرنا چاہیے۔

TALIBAN

ZALMAY KHALILZAD

Tabool ads will show in this div