موبائل کمپنیوں والے بھی حوصلے سے کام لیں، جسٹس عظمت سعید

سپریم کورٹ نے سیکیورٹی کے نام پر موبائل سروس بند کرنے سے متعلق کیس کی سماعت جون کے آخری ہفتے تک ملتوی کر دی۔

دوران سماعت جسٹس شیخ عظمت سعید نے ریمارکس دیے کہ موبائل کمپنیوں والے بھی حوصلے سے کام لیں، کیونکہ کسی سانحہ کی صورت میں مقدمہ موبائل کمپنی سربراہ پر ہونے کا امکان ہوتا ہے۔

وکیل موبائل کمپنی نے دلائل دیے کہ معمولی معمولی باتوں پر سروس بند کر دی جاتی ہے، ترک صدر دورہ کرے یا وزیراعظم کا جلسہ ہو سروس بند کر دی جاتی ہے، کوئی بڑا ایونٹ ہو تو سروس بند کرنا سمجھ بھی آتا ہے۔

جسٹس شیخ عظمت سعید نے ریمارکس دیے کہ ہم بھی یہی کہتے ہیں چھوٹے ایونٹ پر سروس بند نہ کریں۔ جسٹس اعجازالاحسن نے ریمارکس دیے کہ قانون میں ترمیم ہونے دیں پھر دیکھیں گے۔

ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے عدالت کوبتایا کہ قانونی موقف سے حکومت کو آگاہ کر دیا ہے، ایک ماہ کا وقت دیا جائے، پیشرفت سے آگاہ کریں گے۔

Mobile phone company

Tabool ads will show in this div