مشرف کیس،عدالت کاضابطہ فوجداری کےاطلاق سےمتعلق فیصلہ محفوظ

ویب ڈیسک:
اسلام آباد : غداری کیس کی سماعت کرنے والی خصوصی عدالت نے ضابطہ فوجداری کے اطلاق سے متعلق فیصلہ محفوظ کر لیا گیا۔ جسٹس فیصل عرب نے کہا ہے کہ فیصلہ ایک دو روز یا آئندہ ہفتے سنایا جائے گا۔

جسٹس فیصل عرب کی سربراہی میں تین رکنی بینچ غداری کیس کی سماعت کر رہا ہے۔ سابق صدر پرویز مشرف کے وکیل انور منصور نے دلائل دیئے کہ خصوصی کورٹ ایکٹ کی دفعہ 13 میں کہا گیا ہے کہ اس پر ضابطہ فوجداری کا اطلاق نہیں ہوگا۔ اکرم شیخ نے کہا کہ خصوصی عدالت کے قانون میں کوئی خلا یا سقم نہیں، اگر کوئی کمی ہے تو وہاں عمومی اور ریاستی قوانین کا اطلاق ہوگا۔

غداری کیس پر کارروائی فوجداری نوعیت کی ہے ، سپریم کورٹ قرار دے چکی ہے کہ آرمی ایکٹ کے تحت جرائم کو ضابطہ فوجداری کا تابع کیا گیا ہے ،خصوصی عدالت کو وہ تمام اختیارات حاصل ہیں جو ہائی کورٹ کے دائرے میں نہیں آتے ، 1980 میں سپریم کورٹ نے قرار دیا کہ جہاں خصوصی قانون خاموش ہو، وہاں ضابطہ فوجداری کا اطلاق ہو گا، عدالت نے دلائل سننے کے بعد خصوصی عدالت پرضابطہ فوجداری کے اطلاق بارے فیصلہ محفوظ کر لیا۔ سماء

فیصلہ

comedian

captured

fare

Tabool ads will show in this div