شریف خاندان کی پنجاب حکومت سے شکایتیں بڑھنے لگیں

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2018/03/NS-Meeting-Issue-Lhr-Zeesahn-Pkg-19-03.mp4"][/video]

نوازشريف کو اہل خانہ سے ملاقات کي اجازت نہ دينا ظلم ہے شہبازشريف نے بھي حکومت کيخلاف مورچہ لگاليا، پنجاب کے وزيراطلاعات کہتے ہيں کسي کو نہيں روکا شريف خاندان جب چاہيں سابق وزيراعظم سے مل سکتا ہے ۔

پہلے نوازشريف کا علاج نہ ہونے کا شکوہ تھا اب ملاقات پرپابندي کا اعتراض بھي ہے ، شريف خاندان کي پنجاب حکومت سے شکائتيں بڑھنے لگيں ۔

مريم نواز نے گذشتہ روز ملاقات کي اجازت نہ ملنے کي شکايت کي تو آج شہبازشريف نے بھي ٹوئٹر پر بيان جاري کرديا، کہتے ہيں ماں ، بھائي اور بيٹي کو نوازشريف کے ساتھ ملاقات سے روکنا سراسرظلم اور زيادتي ہے ۔

وقت ہمیشہ ایک سا نہیں رہتا، مخالفین کو مریم نواز کی یاد دہانی

دوسري جانب پنجاب حکومت کا اصرار ہے کہ نوازشريف کي ملاقات پرکوئي پابندي نہيں شريف خاندان جب چاہے کوٹ لکھپت جيل جاسکتا ہے ۔

نوازشريف سے پارٹي رہنماوں کي ملاقات کے لئے جمعرات کا دن مقرر ہے ليکن گذشتہ دو ہفتے سے انہوں نے اہل خانہ کے علاوہ کسي سے ملاقات نہيں کي ، جيل حکام کے مطابق نوازشريف کي شوگر اور بلڈپريشر معمول کے مطابق ہے۔

CHIEF JUSTICE

Al Azizia

Tabool ads will show in this div