ہالینڈ میں ٹرام پر فائرنگ، 3 افراد ہلاک، 9 زخمی

Mar 18, 2019

ہالینڈ کے شہر یوتریخت میں چلتی ٹرام پر فائرنگ کردی گئی، واقعے میں 3 افراد ہلاک اور متعدد افراد زخمی ہوگئے، جن میں خواتین اور بچہ بھی شامل ہے۔ ڈچ پولیس کے مطابق حملہ آور نے ایک سے زائد مقامات پر فائرنگ کی، ملزم کا تعلق ترکی سے بتایا جاتا ہے، جس کی گرفتاری کیلئے شہر بھر میں آپریشن جاری ہے، مقامی انتظامیہ نے ٹویٹر پر ممکنہ حملہ آور کی تصویر بھی جاری کردی ہے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق ہالینڈ میں ٹرام پر فائرنگ کرنے والے ملزم کو گرفتار کرلیا گیا، جس کی شناخت 37 سالہ ترک گوکمان تانس کے نام سے ہوئی ہے، پولیس کے مطابق ملزم نے ٹرام میں سوار ہوتے ہی مسافروں کو دھمکایا اور کہا کہ میری جان دیکھیں تاہم مجھے پکڑنے کی کوئی کوشش نہ کرے۔

رپورٹ کے مطابق ٹرام میں فائرنگ کے نتیجے میں 3 افراد ہلاک اور 9 زخمی ہوئے، فائرنگ کے بعد حملہ آور ٹرام سے اتر کر سرخ رنگ کی سیڈان کار میں فرار ہوگیا جو بعد ازاں ایک عمارت کے باہر سے مل گئی جس میں کوئی موجود نہیں تھا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ ملزم کی گرفتاری کیلئے کوششیں جاری ہیں، اس بات کا بھی امکان ہے کہ حملے میں ایک سے زائد لوگ ملوث ہوں۔

انتظامیہ نے شہر بھر میں ہائی الرٹ جاری کرتے ہوئے شہریوں کو ہدایت کی ہے کہ کسی بھی ممکنہ واقعے سے بچنے کیلئے وہ گھروں رہیں۔

ڈچ پولیس نے اپنے ٹویٹر اکاؤنٹ سے ممکنہ حملہ آور کی تصویر شیئر کی ہے، جس میں بتایا گیا ہے کہ ملزم 37 سالہ گوکمان تانس کا تعلق ترکی سے ہے جو واقعے سے 4 منٹ قبل ٹرام میں سوار ہوا تھا، ملزم کی شناخت سی سی ٹی وی فوٹیج سے کی گئی۔

فرانسیسی خبر رساں ایجنسی کا کہنا ہے کہ نیوتریخت میں ٹرام پر مسلح شخص نے فائرنگ کی، فائرنگ سے ٹرام میں موجود مسافروں کو نشانہ بنایا گیا، پولیس کے مطابق حملے میں دہشت گردی کا عنصر شامل ہوسکتا ہے۔

ڈچ انسداد دہشت گردی کے سربراہ کا کہنا ہے کہ دہشت گردی کے امکان کو رد نہیں کیا جا سکتا، تاہم تحقیقات جاری ہیں اور علاقے کو مکمل طور پر گھیرے میں لے لیا گیاہے، حملے کی وجہ سے متعلق فی الحال کچھ نہیں کہہ سکتے۔ علاقے میں آپریشن جاری ہے۔

حکام کے مطابق ملک بھر میں ہائی الرٹ لیول 5 کردیا گیا ہے، ایئرپورٹس اور دیگر اہم عمارتوں پر فوجی جوان تعینات کردیئے گئے ہیں۔

عینی شاہدین کے مطابق حملہ آور کی جانب سے فائرنگ اتنی تواتر سے کی گئی کہ امداد کیلئے آنے والے افراد بھی زخمی ہوگئے، خاتون کو گولی لگتے دیکھا، تاہم فائرنگ کی وجہ سے انہیں طبی امداد نہیں ملی۔

پولیس کے مطابق انسداد دہشت گردی یونٹ موقع پر پہنچ گئی ہے، جب کہ علاقے میں ہیلی کاپٹر بھی محو پرواز ہیں۔

مقامی اخبار کے مطابق واقعے کے بعد یوتریخت یونیورسٹی کے تمام کیمپس بند کردیئے گئے ہیں جبکہ شہر بھر میں ٹرام اور ٹرین سروس بھی معطل ہے۔

واضح رہے کہ اس سے قبل 15 مارچ کو نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ میں سفید فام دہشت گرد نے 2 مساجد میں فائرنگ کرکے 50 افراد کو شہید کردیا گیا تھا۔ مرنے والوں میں ایک تین سالہ کا بچہ بھی شامل تھا۔ جب کہ حملے میں 9 پاکستانی بھی شہید ہوئے۔

HOLLAND

Tabool ads will show in this div