اہلیہ کی درخواست کے ایک سال بعد بھارتی بالر محمد شامی کیخلاف مقدمہ درج

Mar 16, 2019
[caption id="attachment_1486162" align="alignnone" width="640"] تصویر: دکن کرونیکل[/caption]

بھارتی پولیس نے بالر محمد شامی کے خلاف ان کی اہلیہ حسین جہاں کی درخواست پرایف آئی آر درج کرلی۔ مقدمے میں جسمانی و جنسی تشدد کا نشانہ بنانے سمیت الزامات درج کیے گئے ہیں۔

کولکتہ پولیس کے سینیئرافسر کے مطابق شامی کیخلاف دو روز قبل 14مارچ 2019 کو انڈین پینل کوڈ کی شق 498 اے اور 354 اے کے تحت مقدمہ درج کیا گیا ہے۔

شق 498 اے میں ذہنی، جسمانی تشدد اور جہیز سے متعلق ہراساں کرنا جبکہ 354 اے میں تشدد اور جنسی ہراسانی شامل ہے۔

پولیس کے مطابق الزامات درست ثابت ہونے کی صورت میں بھارتی بالر کو 5 سال تک قید کی سزا ہو سکتی ہے۔

ایک سال قبل مارچ 2018 میںشامی کی اہلیہ حسین جہاں نے سوشل میڈیاپوسٹ میں شامی اور ایک لڑکی کی واٹس ایپ چیٹ کے اسکرین شاٹ اور تصاویر شیئر کرتے ہوئے سنگین الزمامات عائد کیے تھے۔ حسین جہاں کے مطابق شامی کے دوسری عورتوں سے تعلقات ہیں اور مجھے شامی اور اس کے گھر والے جسمانی تشدد کا نشانہ بناتے رہے ہیں۔

مقدمہ حسین جہاں کی درخواست کے تقریباً ایک سال بعد درج کیاگیا ہے۔

بھارتی کرکٹر کو اہلیہ کے سنگین الزامات مہنگے پڑے

حسین جہاں کی شامی سے یہ دوسری شادی ہے، وہ سابق ماڈل رہ چکی ہیں جبکہ شامی کا موقف ہے کہ الزامات بےبنیاد ہیں اور وہ اہلیہ کی پہلی شادی سے بھی لاعلم تھے۔

اہلیہ کی جانب سے الزامات عائد کیے جانے پر بھارتی کرکٹ بورڈ نے شامی کا نام سال 2018 کے سینٹرل کانٹریکٹ میں بھی شامل نہیں کیا تھا۔

Mohammad shami

hasin jahan

Tabool ads will show in this div