رافیل طیاروں کا معاہدہ ، کانگریس کے رہنما بھارتی وزیر اعظم پر برس پڑے

Mar 07, 2019

بھارتی اپوزیشن جماعت کانگریس نے رافیل طیاروں کے معاہدے کی دستاویزات چوری پرمودي سے تحقیقات کا مطالبہ کرديا ۔

راہول گاندھی کا کہنا ہے کہ اب تو مذاکراتی ٹیم نے بھی کہہ ديا ہے کہ نریندر مودی نے دونوں طرف بائي پاس کرکے مال بنايا وہ عملاً بائی پاس سرجری کر رہے تھے۔

کانگرس رہنما راہول گاندھی نے کہا کہ رافیل ڈيل ميں نریندرمودی بائی پاس سرجری کررہے تھے، دستاویزات چوری کی تحقیقات مودی سے کي جائيں ۔

راہول گاندھی نے کہا کہ انیل امبانی کو فائدہ پہنچانے کے لیے رافیل ڈیل کا بجٹ بڑھایا گيا، معاملے پرنریندر مودی کو شامل تفتیش کيا جائے۔

 مزید پڑھیے : بھارت کو معاشی محاذ پر بھی بڑا دھچکا لگ گیا

گزشتہ دنوں امریکی صدر نے بھارت کو حاصل ترقی پذیرملک کا درجہ ختم کرنے کا فیصلہ کیا تھا اس امریکی فیصلے کے بعد بھارت پانچ ارب ساٹھ کروڑ کی سالانہ تجارت سے محروم ہوجائے گا ۔

بھارت کی اپوزیشن جماعتوں نے مودی حکومت کی جانب سے کئے گئے معاہدہ کی تحقیقات کے لیے سپریم کورٹ میں درخواست دائر کر رکھی ہے۔ اپوزیشن کا الزام ہے کہ حکومت نے اس معاہدے میں بدعنوانی کی اور اس کے ذریعے بھارتی ارب پتی بزنس مین انیل امبانی کو فائدہ پہنچایا ہے۔

بدھ کو کیس کی سماعت کے دوران اٹارنی جنرل کے کے وینوگوپال نے سپریم کورٹ کو بتایا کہ رافیل طیاروں کے معاہدے سے متعلق دستاویزات چوری ہوچکی ہیں اور حساس دستاویزات کا معاملہ عدالت میں اٹھا کر درخواست گزار آفیشل سیکریٹ ایکٹ کی خلاف ورزی کر رہا ہے۔

 

AMERICA

rahul gandhi

Moodi

Rafeal

Tabool ads will show in this div