کرتار پور راہداری کی تعمیر تیزی سے جاری

پاکستان میں کرتار پور راہداری کی تعمیر تیزی سے جاری ہے۔

ایف ڈبلیو او کے حکام نے بتایا ہے کہ انجینئرز اور مشینری شب و روز کام کرنے میں مصروف ہے، سرحدوں پر بھارت کی جارحیت کے باوجود کام جاری رکھے ہوئے ہیں۔

ایف ڈبلیو او حکام کا مزید کہنا تھا کہ وزیراعظم نے منصوبے کی معیاری اور جلد تکمیل کی ہدایت کی ہے، اعلیٰ معیار یقینی بناتے ہوئے راہداری کا تعمیراتی کام بروقت مکمل کریںگے۔ کرتار پور راہداری سے متعلق معاہدے کے مسودے پر بات چیت کیلئے پاکستانی وفد 14مارچ کو نئی دہلی جبکہ بھارتی وفد 28مارچ کو اسلام آباد کا دورہ کرے گا۔

کرتارپور راہداری کے بنیادی نکات پراتفاق ہے، بھارت

واضح رہے کہ کرتارپور راہداری پر کام کا افتتاح پچھلے برس نومبر میں ہوا تھا۔ اس کام کو 6 ماہ میں مکمل ہونا ہے۔ امکان ہے کہ مئی 2019 میں کرتارپور راہداری کو کھول دیا جائے گا تاکہ بھارت سے سکھ یاتری اس کے راستے پاکستان آکر مذہبی رسومات ادا کرسکیں۔یہ راہداری گردوارہ کرتارپور صاحب کو بھارت میں ڈیرہ گرونانک سے منسلک کرے گی۔ دونوں گردواروں کے مابین 4 کلومیٹر پر محیط اس راہداری پر سکھ یاتری بغیر ویزہ کے دونوں ممالک کے مابین سفر کرسکیں گے۔

KARTARPUR CORRIDOR

Gurdwara Kartarpur Sahib

Tabool ads will show in this div