وزیراعظم عمران خان کا بھارتی پائلٹ کو رہا کرنے کا اعلان

وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ بھارتی پائلٹ کو کل بروز جمعہ امن کی علامت کے طور پر رہا کردیں گے۔ ہندوستان کی موجودہ حکومت جنگ کو فروغ دے رہی ہے، پلوامہ واقعے پر ثبوت دینے کے بجائے بھارت میں جنگی جنون بڑھتا گیا،جنگ میں کوئی جیتتا نہیں ہے،بھارت میں کشمیر کے مسئلے پر بحث کی ضرورت ہے،بھارتی حکومت کو اپنی پالیسی پر نظر ثانی کرنا ہوگی،مقبوضہ کشمیر میں صرف آزادی کی آواز آرہی ہے،جنگ کسی بھی مسئلے کا حل نہیں ہے،پاکستان امن کا خواہش مند ہے۔

وزیراعظم عمران خان نے پارلیمنٹ کے مشترکہ  اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اپوزیشن کا شکریہ ادا کرتا ہوں کہ اس مشکل وقت میں سب متحد ہیں۔

انھوں نے بتایا کہ پہلے بھی یہ کہا تھا کہ ہندوستان ایک قدم دوستی کی جانب بڑھائے تو ہم دو قدم بڑھائیں گے۔ یہ میرا ویژن ہے کہ کوئی قوم ترقی نہیں کرسکتی جب تھوڑے لوگ امیر ہوں اور غریبوں کا سمندر ہو۔ ہندوستان کے انتخابات کی وجہ سے دوستی کے خط کا اچھا جواب نہیں آیا۔

پلوامہ واقعے پر انھوں نے کہا کہ اس حملے کے صرف آدھے گھنٹے بعد پاکستان پر انگلیاں اُٹھنا شروع ہوگئیں۔ پاکستان ایسے حملے سے کیا حاصل کرسکتا تھا۔ بھارت کو کہا کہ آپ شواہد دیں گے تو ہم کارروائی کریں گے۔ ہم نے نیشنل ایکشن پلان پر دستخط کئے ہوئے ہیں کہ پاکستان اپنی سرزمین کو دہشت گردی کے خلاف استعمال نہیں ہونے دیں گے۔ ایف اے ٹی ایف کے تحت بھی اہم اقدامات کررہے تھے۔

جنگیں مسائل کا حل نہیں،آخر میں مذاکرات کی میز پرآنا پڑتا ہے،شہبازشریف

انھوں نے کہا کہ میڈیا کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں کہ یہاں بڑا ذمہ دارانہ ثبوت دیا گیا۔ میڈیا نے بہتر کردار ادا کیا۔ میڈیا نے جنگ کو فروغ نہیں دیا۔ ہندوستان میں جنگی کیفیت تھی۔ شک تھا کہ کچھ نہ کچھ ہوگا۔ انھوں نے کہا کہ پہلے ہی آگاہ کردیا تھا کہ کارروائی کی صورت میں جواب دیں گے۔ وزیراعظم نے بتایا کہ بھارت کی مجبوری ہے کہ انتخابات کی وجہ سے ایسی صورتحال بنائی جائے۔ایک طرف ہندوستان کا معاملہ ہے تو دوسری طرف افغانستان کا معاملہ ہے۔ وہاں کوشش کی جارہی ہے کہ امن قائم ہو۔

امن ساری دنیا کے لئے بہتر ہے،پاکستان بھارت دونوں ملکوں میں بہت غربت ہے،خورشید شاہ

عمران خان نے بتایا کہ 3 روز قبل بھارتی حملے کی فوری اطلاع ملی تاہم فیصلہ کیا کہ جانی نقصان کا پہلے اندازہ لگایا جائے ، ذمہ داری ریاست کے طور پر کوئی فوری ایکشن نہیں لیا۔پاکستان نے اپنی صلاحیت اور دفاع میں یہ اقدام کیا۔ انھوں نے انکشاف کیا کہ بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کو کال کرنے کی کوشش کی، ہماری افواج نے دہشت گردی کے خلاف جنگ لڑی ہے، یہ دنیا کی بہترین فوج ہے، ساری قوم متفق ہے۔

جنگ کا خطرہ کم ہوگیا ہے مگر تیار رہنا مسلمان کی شان ہے،شیخ رشید

انھوں نے بتایا کہ کشیدہ صورتحال کو آگے بڑھانا مفاد میں نہیں ہے۔ دنیا کے وزرائے خارجہ نے بھی تناؤ کم کرنے کے پیغامات بھیجوائے۔ یہ سارا معاملہ کشمیر کی وجہ سے ہے، ہندوستان کی عوام کو پوچھنا چاہیے کہ اس ظلم سے کیا کشمیریوں کی آواز دبا سکتے ہیں؟ کشمیر میں جتنا ظلم ہورہا ہے ،حالات مختلف ہورہے ہیں۔

IMRAN KHAN

Joint session

INDIAN PILOT

We support Pakistan Army

Tabool ads will show in this div