قابض بھارتی فوج نے بڑے پیمانے پر کریک ڈاؤن شروع کردیا

بھارتي مظالم کے خلاف مقبوضہ کشمير ميں مکمل ہڑتال جاري ہے۔ پيرا ملٹري فورسز نے بڑے پيمانے پر کريک ڈاؤن شروع کرديا۔ محبوبہ مفتي، غلام نبي سمجھي اور سجاد لون سميت دو سو سے زائد کشميريوں کو گرفتار کرليا گیا ہے۔

بھارتي جارحيت نا منظور کے نعرے لگاتے بھارتي مظالم کيخلاف مقبوضہ کشمير ميں مکمل ہڑتال جاری ہے۔ وادي ميں مزيد 10 ہزار فوجي اہلکار تعينات کردیے گئے ہیں، جب کہ بڑے پيمانے پرکريک ڈاؤن بھی جاری ہے۔ قابض فورسز نے 200 کشميريوں کو گرفتار کرليا۔

 

آزادي پسند کارکنوں اور رہنماؤں کے خلاف مقبوضہ کشمير ميں قابض فورسز کے جگہ جگہ چھاپے کي کارروائياں جاری ہیں۔ اننت ناگ اسلام آباد سے جماعتِ اسلامي کے200کارکنوں کو گرفتار کيا گيا۔ کشميريوں کي حمايت ميں بولنے پر سابق کٹھ پتلي وزيراعليٰ محبوبہ مفتي کو بھي گرفتار کرليا گيا۔

 

گرفتاریوں اور آرٹیکل 35 اے کی منسوخی کی کوششوں کے خلاف مقبوضہ کشمير ميں مکمل ہڑتال کي گئي۔ سری نگر میں دفعہ 144 کے تحت پابندیاں نافذ ہیں۔ تعليمي ادارے، بازار اور دکانيں بند، جب کہ سڑکيں سنسان رہيں۔

 

،علي گيلاني کا کہنا ہے کہ بھارت خطے ميں تباہي کو دعوت دے رہا ہے، مسئلہ کشمير کے حل ہونے تک نہ صرف جنوبي ايشيا بلکہ دنيا کے امن و استحکام کو بھي سنگين خطرات لاحق رہيں گے۔

Indian Soldiers

Pulwama Attack

Section 144 Kashmir

Tabool ads will show in this div