بلوچستان میں بارشوں کے باعث سیلابی صورتحال، 4 افراد جاں بحق

Feb 21, 2019

بلوچستان بھر میں کئی دنوں سے جاری بارشوں کا سلسلہ رک گیا،لسبیلہ ، خضدار اور کیچ میں طوفانی بارش کے بعد سیلابی صورتحال پیدا ہوگئی ، لسبیلہ میں پچاس سے زائد افراد سیلابی پانی میں پھنس گئے اوتھل میں چار افراد سیلابی ریلے میں بہہ کر جاں بحق ہو گئے۔

محکمہ موسمیات کے مطابق بلوچستان میں بارشوں اور برفباری کا حالیہ سلسلہ رک گیا  گزشتہ شب سب سے زیادہ بارش سب سے  خضدار میں 41 ملی میٹر ، لسبیلہ 28،سبی،21،بارکھان 20اورتربت اور کوئٹہ میں 18 ،قلات15، گودار13، ژوب12 اورزیارت میں 11 ملی میٹربارش ریکارڈ کی گئی زیارت،کان مہترزئی،توبہ اچکزئی،توبہ کاکڑی،چھپر لفٹ اور ہربوئی میں برفباری ہوئی ۔زیارت میں چار انچ برفباری ریکارڈ کی گئی۔

انتظامیہ کے مطابق اوتھل میں سیلابی ریلے میں بہہ کر چار افراد جاں بحق ہو گئے جس میں سے تین کی لاشیں نکال لی گئی۔لسبیلہ میں بارشوں سے سیلابی صورتحال پیدا ہوگئی۔سیلابی پانی کوئٹہ کراچی قومی شاہراہ پرآنے کے سبب  بیلہ اور اوتھل میں ٹریفک معطل ہوگئی۔مختلف مقامات پرلوگ  پھنس گئے ہیں جن میں سے بعض کو ریسکیو کرلیا گیا۔بارشوں اور برفباری کے باعث پی ڈی ایم کو ہائی الرٹ کر دیاگیا جبکہ پی ڈی ایم اے کے تمام ملازمین کی چھٹیاں منسوخ کر دی گئی،صورتحال سے نمٹنے کیلئے وزیر اعلیٰ سیکرٹریٹ کوئٹہ میں بھی کنٹرول روم قائم کر دیا گیا۔

پی ڈی ایم حکام کے مطابق  صوبائی حکومت کی جانب سے چار ایم آئی 17 ہیلی کاپٹر امدادی سرگرمیوں کیلئے پی ڈی ایم اے کے سپرد کر دیے گئے پی ڈی ایم اے کے مطابق  ضلع آواران ، کیچ ، پنجگور اور لسبیلہ کے اضلاع حالیہ بارشوں سے متاثر ہوئے ہیں ۔  ضلع آواران میں تین سو اور لسبیلہ میں ایک سو پچاس خاندان بارشوں سے متاثر ہوئے ہیں جن کیلئے خوراک اور امدادی سامان روانہ کر دیا گیا ہے ۔ بارشوں کے باعث سڑکوں پر پانی کھڑا ہونے سے  کوئٹہ کراچی قومی شاہراہ ٹریفک کے لیئے گزشتہ روز بند ہوگیا تھا جسے آج بحال کر دیا گیا ۔

پی ڈی ایم حکام کے مطابق ریسکیو اور امدادی سرگرمیوں پاکستان آرمی ، ایف سی اور دیگر سول فورسزکا تعاون بھی  ہے،کمشنر قلات ڈویژن کے مطابق ضلع میں سیلابی صورتحال کے سبب ایمرجنسی نافذ کرکے پا ک فوج کی بھی مدد طلب کرلی گئی ہے۔

PDMA

Flood in Balochistan

Rescue operations

Tabool ads will show in this div