Uncategorized

پلوامہ حملے کی جو تحقیقات کروانا چاہتے ہیں، پاکستان سب کے لیے تیار ہے،عمران خان

وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ اگر بھارت نے پاکستان پر حملہ کیا تو پاکستان سوچے گا نہیں بلکہ فوری جواب دے گا۔ بھارت سوچے کشمیر کی موجودہ  صورتحال کی کیا وجہ ہے؟، پلوامہ حملے کی جو تحقیقات کروانا چاہتے ہیں، پاکستان سب کے لیے تیار ہے۔

مقبوضہ کشمیر میں پلوامہ حملے کے تناظر میں پالیسی بیان دیتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ چند دن پہلے مقبوضہ کشمیر میں جو واقعہ ہوا، اس میں پاکستان پر الزام لگایا ہے۔ سعودی شہزادے کے دورے کی وجہ سے ردعمل میں تاخیر ہوئی۔

انھوں نے کہا کہ بھارتی حکومت نے بغیر ثبوت پاکستان پر الزام لگا دیا۔ اگر پاکستان اتنی اہم کانفرنس کروارہا تھا تو کوئی احمق بھی ایسا حملے نہیں کرواسکتا تھا۔ وزیراعظم نے کہا کہ  پاکستان کیوں ایسا حملہ کرواتا ، پاکستان نے 15 سال دہشت گردی کے خلاف جنگ لڑی ہے، پاکستان میں امن اور استحکام آرہا ہے،ہم کیوں ایسا حملہ کرواتے۔

انھوں نے بھارت سے سوال کیا کہ کیوں ماضی میں پھنسے رہتے ہیں، یہ نیا پاکستان ہے، نئی سوچ ہے، ہم کبھی نہیں چاہتے ہیں کہ کوئی پاکستان سے جا کرکہیں دہشت گردی کرے۔ عمران خان نے بھارت کو پیش کش کی کہ اگر اس حملے میں کوئی پاکستانی ملوث ہے تو تحقیقات کروانے کےلیے تیار ہیں۔ اگر پاکستان کے ملوث ہونے کے ثبوت ہیں توبھارت پیش کرے۔ اگر کوئی پاکستان دشمنی میں ایسے بیانات دیتا ہے تو یہ غلط ہے۔

وزیراعظم نے مزید کہاکہ  بھارت سے جب بھی مذاکرات کی بات کرنے کا کہتے ہیں تو دہشت گردی کا معاملہ  سامنے رکھا جاتا ہے، پاکستان اس معاملے پر بھی بات کرنے کے لیے تیار ہے، دہشت گردی سارے خطے کا مسئلہ ہے،دہشت گردی سے پاکستان کو سب سے زیادہ نقصان ہوا ہے۔انھوں نے کہا کہ ہندوستا ن میں نئی سوچ آنی چاہئے۔ یہ دیکھنا چاہئے کہکشمیر کے نوجوان اس نہج پر پہنچ گئے ہیں جہاں ان کے دلوں میں موت کا خوف نکل گیا ہے۔ اگر آج افغانستان میں 17 سال بعد مذاکرات واحد حل کہا جارہا ہے تو کمشیر میں ایسا ممکن کیوں نہیں۔ ہندوستان میں سن رہے ہیں کہ پلوامہ حملے پر پاکستان سے بدلہ لینا چاہئے۔ بھارت میں الیکشن کا سال ہے اس لئے ایسی باتیں کی جارہی ہیں۔

وزیراعظم نے دو ٹوک کہا کہ اگر بھارت نے حملہ کیا تو پاکستان فوری ردعمل کا مظاہرہ کرے گا اور بھارت کو جواب دینے کے علاوہ کوئی دوسرا آپشن نہیں ہوگا۔ جنگ شروع کرنا آسان ہے، جنگ ختم کرنا انسان کے ہاتھ میں نہیں ہے اور موجودہ صورتحال میں عقل اور حکمت ضروری ہے۔

 اس سے قبل وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ وزیراعظم عمران خان آج دن ایک بجے پلوامہ واقعے سے متعلق پالیسی بیان جاری کریں گے۔سماجی رابطے کی سائٹ ٹوئٹَر پر اپنے پیغام میں فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ وزیراعظم عمران خان کا خطاب سرکاري ٹي وي اور ریڈیو پر نشر کيا جائے گا۔

واضح رہے کہ مقبوضہ وادی کے علاقے پلوامہ میں بھارتی قافلے پر حملے میں 44 فوجی ہلاک ہوئے تھے۔ حملے کے فورا بعد ہی بھارت کی جانب سے پاکستان پر الزام تراشی کا سلسلہ شروع ہوگیا تھا۔

Indian Soldiers

PM address

Tabool ads will show in this div