نیب کی تحویل میں موجود علیم خان کا 9 روزہ جسمانی ریمانڈ منظور

 

آمدن سے زائد اثاثوں کے الزام میں گرفتار پی ٹی آئی رہنما علیم خان کا نيب نے احتساب عدالت سے 9 روزہ ریمانڈ حاصل کرلیا ہے۔

لاہور کی احتساب عدالت میں علیم خان کو جمعرات کی صبح پیش کیا گیا۔ اس موقع پر کارکنان کی بڑی تعداد عدالت کے باہر موجود تھی۔ عليم خان کو آمدن سے زائد اثاثوں کے کيس ميں گذشتہ روز گرفتار کيا گيا تھا، ان پر آف شور کمپنياں بنانے، اختيارات کے ناجائز استعمال کا بھی الزام ہے۔

  نيب نے 15 روز کے جسماني ريمانڈ کي استدعا کي تھی تاہم عدالت نے 9 روز کا جسماني ريمانڈ منظور کرکے 15 فروری کو عدالت میں پیش کرنے کا حکم ديا ہے۔ نیب پراسیکیوٹر نے عدالت کو بتایا کہ عليم خان کے اثاثے آمدن سے زائد ہيں،بيرون ملک سے پيسے آتے رہے۔ نیب کے وکیل نے کہا کہ علیم خان نے آف شور کمپنی بھي بنائی۔ باہر سے آنے والے پيسوں کا جواب نہيں دے سکے، انھوں نے اثاثے وزارت کے دوران بنائے۔

پی ٹی آئی رہنما علیم خان کو نیب نے گرفتار کرلیا

وکیل صفائی نے کہا کہ نيب کے پاس عليم خان کے خلاف کوئی ثبوت نہيں، جب وزير تھے تب انفارميشن ٹيکنالوجي کا بجٹ بہت کم تھا،انھیں  والدين سے جو رقم ملی  وہ ظاہرکردی ،عليم خان کےخلاف کسي نےشکايت بھي نہيں کی۔

علیم خان نے عدالت کو بتایا کہ نیب کو تمام دستاویز فراہم کی ہیں،نیب خود کوئی کاغذ تک نہ لاسکا۔

PTI

Tabool ads will show in this div