ٹیکنالوجی

سمندری طوفان،بارشوں اور آندھی کی پیش گوئی کرنے والے میٹ ٹاور پر کام جاری

کراچی کو سمندری طوفان سے بچانے کیلئے محکمہ موسمیات میدان میں آگیا ہے۔ ملک کے سب سے بڑے میٹ ٹاور کی تعمیر کا آغاز کردیا گیا۔ میگا پراجیکٹ کیلئے مالی معاونت کی حامی جاپان نے بھری ہے۔

محکمہ موسمیات نے کراچی کے ساتھ ساحلی پٹی کو قدرتی آفات سے محفوظ بنانے کی کوششیں شروع کردی ہیں۔ آمد سے قبل طوفان کی اطلاع  دینے والا ٹاور لگانے پر کام شروع کردیا گیا ہے۔

ڈی جی میٹ محمد ریاض نے بتایا کہ عمارت کی تعمیر جاری ہے،5 منزلیں بن چکی ہیں۔ یہ میگا ٹاورکراچی اوراس کے اطراف 400 کلومیٹر تک سمندرمیں ہونے والی تبدیلیوں پرنظررکھے گا۔

ڈی جی موسمیات محمد ریاض نے منصوبے کے اخراجات کی تفصیل اورتکمیل کی مدت بھی بتادی۔ انھوں نے آگاہ کیا کہ رڈار لگانے کے عمل میں 15 سو 80 ملین روپے کا خرچ آئے گا، 1542 ملین روپے کی امداد جاپان نے دی ہے۔ 38 ملین روپے حکومت پاکستان دے گا۔ انھوں نے مزید بتایا کہ یہ منصوبہ دسمبر 2020 تک یہ مکمل ہوجائے گا۔

میگا ٹاور کے جدید رڈار کے ذریعے سندھ میں شدید بارش اور آندھی کی پیشگوئی بھی کی جاسکے گی۔

MET OFFICE

Thunder-storm

تبولا

Tabool ads will show in this div

تبولا

Tabool ads will show in this div